سینیٹر ولیداقبال نے پشاور میٹرو منصوبے پر سپریم کورٹ کے حکم امتناعی کی وجہ بیان کردی

سینیٹر ولیداقبال نے پشاور میٹرو منصوبے پر سپریم کورٹ کے حکم امتناعی کی وجہ ...
سینیٹر ولیداقبال نے پشاور میٹرو منصوبے پر سپریم کورٹ کے حکم امتناعی کی وجہ بیان کردی

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) تحریک انصاف کے سینیٹر ولید اقبال نے کہا ہے کہ بی آرٹی پر اگر سپریم کورٹ نے حکم امتناعی دیاہواہے تواس کی وجہ یہی ہے کہ کوئی ایسی وجہ ہے کہ ایک کیس جس میں بدعنوانی نہیں  ، اس کو بدعنوانی کا کیس بنایاگیا ہے ۔

سماءنیوز کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے ولید اقبال نے کہا کہ مجھے نہیں پتہ کہ کس وزیر یا مشیر نے باہر جاکر کہا ہے کہ میر ی ذاتی کمپنی میں سرمایہ کاری کریں لیکن جس نے کہاہے ، وہ پکڑا جائے گا ۔انہوں نے کہا کہ نیب کا کام ہے کہ بدعنوانی اور کرپشن کا تعین کرے ، بی آرٹی پر اگر سپریم کورٹ نے حکم امتناعی دیاہواہے تواس کی وجہ یہی ہے کہ کوئی ایسی وجہ ہے کہ ایک کیس جس میں بدعنوانی نہیں ہے ، اس کو بدعنوانی کا کیس بنایاگیا ہے ۔

ولید اقبال کا کہنا تھا کہ کریمنل کیس میں تفتیش کے دوران حکم امتناعی دیاجاتا ہے یا نہیں اس حوالے سے سپریم کورٹ سے پوچھا جائے مجھ سے نہ پوچھا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ میں سپریم کورٹ کے حکم کا پابند ہوں،میں کون ہوتا ہوں، یہ کہوں کہ سپریم کورٹ کا فیصلہ غلط ہے ۔

مزید : قومی