بھارت کشمیریوں کی امنگوں کو پاؤں تلےروند کر ہندوراشٹرا میں تبدیل کرنے پر عمل پیرا ہے: سردار مسعود خان

بھارت کشمیریوں کی امنگوں کو پاؤں تلےروند کر ہندوراشٹرا میں تبدیل کرنے پر عمل ...
بھارت کشمیریوں کی امنگوں کو پاؤں تلےروند کر ہندوراشٹرا میں تبدیل کرنے پر عمل پیرا ہے: سردار مسعود خان
سورس:   File

  

مظفرآباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) صدر آزاد کشمیر مسعود خان نے کہا ہے کہ متنازعہ ریاست جموں و کشمیر کی مسلم اکثریت اپنے حق خودارادیت کا استعمال کرتے ہوئے اپنے سیاسی مستقبل کا فیصلہ کرنے کی خواہش مند ہے لیکن ہندوستان کشمیریوں کی امنگوں کو پاؤں کے نیچے روند کر مقبوضہ علاقے کو ہندو راشٹرا میں تبدیل کرنے کے منصوبے پرعمل پیرا ہے

سردار مسعود خان نے ویبنار سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بھارت کی بی جے پی  آر ایس ایس حکومت نے مقبوضہ کشمیر میں جن گھناونےاور قابل سزا جرائم کا ارتکاب کیا ہے اس سے دنیا پوری طرح واقف ہے۔ ہندوستان کے انسانیت کے خلاف جرائم کو عالمی میڈیا ، بااثر پارلیمانز اور بین الاقوامی سول سوسائٹی نےخوب اجاگر  ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ہمیں بند کمروں کے اجلاسوں اور سفارتی چیمبروں سے باہر نکل کر کشمیر میں ہونے والے جرائم کے خلاف آواز بلند کرنا کشمیریوں کے لئے انصاف کا مطالبہ کرنا ہوگا۔ اس مقصد کو حاصل کرنے کے لئے کوئی مختصر راستہ نہیں ہے

صدر آزاد کشمیر نے کہا کہ ہندوستانی حکام نے مقبوضہ علاقے کی آبادی میں تبدیل لانے کےلئے بھارت سے بیس لاکھ سے زیادہ ہندوؤں کو درآمد کرکے اُنہیں مقبوضہ علاقےکا ڈومیسائل دیا ہےاور وہ اس تعداد کو بڑھا کر 50 لاکھ سے زیادہ کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔ بھارت ان کارروائیوں کے ذریعے بین الاقوامی انسانی قانون اور روایتی قانون کے اصولوں کو پامال کررہا ہے۔ چوتھے جنیوا کنونشن اوراسکےایڈیشنل پروٹوکول ون کے تحت کوئی قابض ریاست اپنے کسی زیر قبضہ علاقے میں نئی آبادکاری, آبادی کی منتقلی، لوگوں کو علاقہ بدری پرمجبور نہیں کرسکتی۔ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل ، جنرل اسمبلی اور اس کے انسانی حقوق کمیشن نے آبادی کی اس طرح منتقلی، نئی آباد کاری یا آبادی میں پیوند کاری کو غیر قانونی قرار دے رکھا ہے۔

مزید :

علاقائی -آزاد کشمیر -مظفرآباد -