ریپڈٹرانزٹ منصوبہ کاروباری سرگرمیاں ٹھپ،ٹریفک جام معمول ،شہری پریشان

ریپڈٹرانزٹ منصوبہ کاروباری سرگرمیاں ٹھپ،ٹریفک جام معمول ،شہری پریشان

  

لاہور (اسد اقبال/تصویر ذیشان منیر) ریپڈ ٹرانزٹ منصوبہ کے تحت لٹن روڈ پرسڑک کی اکھاڑ بچھاڑ شہریوں ،تاجروں اور راہگیروں کے لئے وبال جان بن چکی ہے۔ تقریباً دو ماہ سے شروع تعمیراتی کام سے لٹن روڈ پر کاروباری سرگرمیاں ٹھپ، اڑتی دھول سے مکین گلے کی بیماریوں کا شکار اور شہریوں کا پیدل چلنا بھی دشوار بن چکا ہے۔ جبکہ ٹریفک پلان نہ بنانے کی وجہ سے گاڑیوں کی لمبی قطاریں اور ٹریفک کا جام رہنا معمول بن چکا ہے۔ تاجروں اور شہریوں نے حکومت سے اپیل کی ہے کہ لٹن روڈ پر تعمیراتی کام کو جلد از جلد پایہ تکمیل تک پہنچایا جائے۔ پاکستان رپورٹ کے مطابق ریپڈ ٹرانزٹ منصوبہ کے تحت لٹن روڈ کے آغاز مزنگ چوک سے سڑک کو اکھاڑ بچھاڑ کرکے تعمیراتی کام کا سلسلہ جاری ہے۔ جس کے باعث سڑک محدود اور تعمیراتی میٹریل بکھرا پڑا رہنے سے تاجروں کا کاروبار نہ ہونے کے برابر رہ گیا ہے۔ واضح رہے کہ کئی ایک خواتین اور بچے پاﺅں پھسلنے کے باعث کھڈوں میں گر کر زخمی بھی ہو گئے ہیں۔ لٹن روڈ کے مکینوں نعیم، محمد صادق، محمد اویس، اکرم شاہ، محمد بشیر محمد نواز، محمد عمران، محمد مقبول ،میاں نواز، رشی مسیح اور محمود ایاز نے پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ لٹن روڈ پر سڑک کی اکھاڑ بچھاڑ نے مکینوں کی زندگی اجیرن بنا چھوڑی ہے۔ تعمیراتی کام سست روی کا شکار ہونے سے منصوبہ طویل تر ہوتا جارہاہے جس سے شدید پریشانی کا سامنا ہے انہوں نے کہا کہ بچوں کو سکولوں میں لانے اور لے جانے کے لئے خود جانا پڑتا ہے کیونکہ ناہموار راستے اور جا بجا بکھرے تعمیراتی میٹریل سے بچے گر کر زخمی بھی ہو چکے ہیں۔ شہریوں نے حکومت سے اپیل کی ہے کہ لٹن روڈ پر تعمیراتی کام میں تیزی لاتے ہوئے اس منصوبہ کو جلد از جلد پایہ تکمیل تک پہنچایا جائے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -