گوجرنوالہ : مضر صحت اشیاء خوردونوش کی فروخت سرعام جاری ، شہری بیماریوں میں مبتلا

گوجرنوالہ : مضر صحت اشیاء خوردونوش کی فروخت سرعام جاری ، شہری بیماریوں میں ...

 گوجرانوالہ(شبیر حسین مغل) ڈسٹرکٹ گوجرانوالہ میں 400سے زائد مقامات پر سرکاری اداروں کی مجرمانہ غفلت اور نذرانوں سے دولت کے پجاری لاکھوں شہریوں میں کھل عام موت کا بیو پار کر رہے ہیں مضر صحت اور خطرناک تیزابی اجزاء کی آمیزش سے تیار کردہ ملاوٹی اشیاء جن میں مرچ ،ہلدی ،فاسٹ فوڈ ،مصالحہ جات ،مربہ جات ،جوس ،گھی ،کوکنگ آئل ،سلانٹی آٹا ،سگریٹ ،صابن ،سوئٹس ،بچوں کی ٹافیاں ،مشروبات وغیرہ شامل ہیں جبکہ بعض درندہ صفت مینو فیکچرز مردا جانوروں کی ویسٹ اور چربی سے بھی گھی ،آئل ،مکھن وغیرہ تیار کرتے ہیں کھل عام تھوک وپرچون فروخت کی جا رہی ہیں اور بیشتر طاقتور با اثر جعلساز سرکاری مشینری کے خصوصی تعاون سے ان ملاوٹی اور انسانی صحت کی قاتل اشیاء کو ملٹی نیشنل اور معیاری کمپنیوں کی جعلی پیکنگ میں پیک کر کے فروخت کر نے کے دھندے میں ملوث ہیں اور اس مکروہ دھندے کو حقیقت کا رنگ دینے کیلئے انہوں نے باقاعدہ طور پر اصلی کمپنیوں کی جعلی مہریں ،سٹکرز ،مونو اور کیش میمو بھی بنوا رکھی ہیں جبکہ یہ ملاوٹی اور دو نمبر اشیاء روزانہ کے حساب سے دیہی علاقوں کے علاوہ اندرون شہر بھی خاصی بڑی مقدار میں خریدو فروخت کیلئے جاتی ہیں اور اس میں کئی معروف سرمایہ دار ،تاجر ،فیکٹری اونر ملوث ہیں جبکہ یہ مذکورہ دو نمبر اشیاء اصلی کے مقابلہ میں انتہائی سستے داموں سیل کی جاتی ہیں اور اس کے ان جعلسازوں نے متعدد سیلز مین کمشن ایجنٹ ،بروکر اور گاڑی بان ہائر کر رکھے ہیں جنہیں تنخواہ کی بجائے ’’سیلز پالیسی‘‘کے تحت 13پرسنٹ سے لے کر 27پر سنٹ تک کمشن دیا جاتا ہے جبکہ اندرون شہر معروف بازاروں کی دکانوں کے علاوہ ان اشیاء کو بیرونی علاقوں میں واقع خفیہ گوداموں میں خاصی بڑی مقدار میں سٹور کیا جاتا ہے اور ضرورت کے مطابق وہاں سے رات پانچ بجے کے بعد گاڑیوں کے ذریعے مال نکالا جاتا ہے اور دو نمبر اور مضر اشیاء کی تیار و خریدو فروخت میں باقاعدہ طور پر ایک طے شدہ معاہدے کے تحت فوڈ انسپکٹر، متعلقہ ٹاؤنز محکمہ صحت ،ضلعی انتظامیہ اور پولیس کو بھتہ دیا جاتا ہے جس کی وجہ سے ان کے خلاف کسی بھی قسم کی کوئی قانونی کاروائی نہیں کی جاتی ان مضر صحت اور دو نمبر اشیا ء کے استعمال سے شہریوں کی بڑی تعداد ،جگر ،معدہ ،سانس ،ہیپاٹائٹس ،دمہ ،موٹاپا ،ٹی بی ،گردوں اور دیگر مہلک بیماریوں کا شکار ہو رہی ہیں ذرائع کے مطابق ڈسٹرکٹ گوجرانوالہ کے علاوہ اس مال کو سیالکوٹ ،گجرات ،منڈی بہاؤالدین ،لاہور ،فیصل آباد ،رحیم یار خان ،حافظ آباد ،نارووال ،سرگودھا ،جہلم ،چکوال ،خانیوال ،ملتان ،میر پور ،مظفر گڑھ ،راجن پور ،ڈیرہ غازی خاں ،لیہ جھنگ ،اور دیگر اضلاع میں بھی فروخت کیا جاتا ہے تاہم اس سلسلہ میں محکمہ صحت کے ترجمان کا کہنا ہے کہ وہ ایسے دو نمبریوں کے خلاف گاہے بگاہے قانونی ایکشن لیتے رہتے ہیں اور ان اشیا ء کے سیمپل لے کر انھیں لیبارٹری ٹیسٹ بھی کروائے جاتے ہیں اور غلط رزلٹ موصول ہونے پر ان کے چالان عدالتوں میں بھجوادےئے جاتے ہیں تاہم سب کو پکڑنا ان کے بس میں نہیں ہے ان کی بھی کچھ مجبوریاں ہیں ۔

مزید : علاقائی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...