پاکستان میں فوج آئی تو لوگ استقبال کریں گے :عمران خان ،پاک فوج کو زیر بحث نہ لایا جائے :شہباز شریف

پاکستان میں فوج آئی تو لوگ استقبال کریں گے :عمران خان ،پاک فوج کو زیر بحث نہ ...

مظفر آباد (مانیٹرنگ ڈیسک )تحریک انصاف کے چیئر مین عمران خان نے کہا ہے کہ اگر پاکستان میں فوج آئی تو لوگ مٹھائیاں بانٹ کر جشن منائیں گے ،ترکی میں حکومت نے عوام کو خوشحالی دی اس لیے عوام نے جمہوریت کو بچایا ،پاکستان میں جمہوریت کو فوج سے نہیں بلکہ نواز شریف کی آمریت اور بادشاہت سے خطرہ ہے۔ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف کبھی بھی مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے بھارت پر دباو نہیں ڈال سکتے،نواز شریف نے کشمیر کی حالیہ صورتحال پر بھی راحیل شریف کے بعد بیان دیا۔آزادکشمیر کے علاقے چکسواری میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ترکی میں جمہوریت حکومت کو ہٹانے کی کوشش کی گئی لیکن جمہوریت کو بچانے کے لیے عوام سڑکوں پر نکل آئی۔ترکی میں لوگوں نے جمہوریت کو اس لیے بچا یا کیو نکہ وہاں حکومت نے عوام کو خوشحالی دی۔ترک صدر نے اقتدار میں آکر ملک کے قرضے ختم کیے ،تعلیم پر پانچ گنا زیادہ پیسے خرچ کیے ،ہسپتالوں کی حالت ٹھیک کر کے غریبوں کے لیے مفت علاج کی سہولتیں دیں اور ترک کرنسی کی قدر میں اضافہ کیا ،اس لیے جب چند فوجیوں نے حکومت گرانے کی کوشش کی تو عوام سڑکوں پر آگئی۔عمران خان نے کہا اگر پاکستان میں فوج آجائے تو لوگ مٹھائیاں بانٹ کر جشن منائیں گے کیو نکہ نواز شریف نے ذاتی دولت بڑھائی ،ملک کے قرضوں میں تین سالوں کے دوران 6ہزار ارب روپے اضافہ کیا ،کرپشن سے مال بنا یا اور اداروں کو غلام بنا لیا۔انہوں نے کہا کہ ابھی تک قوم کو بیرون ملک پیسوں کا جواب نہیں مل سکا ،حسنی مبارک ،کرنل قذافی اور صدام حسین بھی جواب نہیں دیتے تھے۔انہوں نے کہا کہ جب تک پاکستان کو مضبوط نہیں ہوتا تب تک مسئلہ کشمیر کے حوالے سے انڈیا پر بین الاقوامی طور پر دباو نہیں ڈال سکتے۔ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف کو اپنے کارو بار کا فکر ہے اس لیے وہ کبھی بھی بھارت کے ساتھ مسئلہ کشمیر پر بات نہیں کرے گا۔عمران خان نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں حالیہ دنوں کی صورتحال پر بھی نواز شریف کی کوئی آواز نہیں نکلی ،جب جنرل راحیل شریف کا بیان آیاتو اس کے بعد نواز شریف نے بھی ایک چھوٹا سا بیان دے دیا۔انہوں نے مزید کہاکہ ہم پہلے اپنے ملک کو اندرونی طور پر مضبوط کریں گے پھر بھارت سے مسئلہ کشمیر سمیت تمام تنازعات پر بات کریں گے۔

عمران خان

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کہا ہے کہ ترکی میں ناکام بغاوت کے حوالے سے پاک فوج کے کردار کو زیربحث لانا مناسب رویہ نہیں۔ ایک ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس وقت پاک فوج اپنی پوری توانائیوں کے ساتھ ضرب عضب جیسے قومی فریضے کی انجام دہی میں مصروف ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایک مکمل پیشہ ورانہ فورس کے طور پاک فوج کی صلاحیتوں کا اعتراف آج دنیا بھر میں کیا جا رہا ہے۔ چنانچہ اس موقع پر تمام سیاسی اورغیر سیاسی حلقوں کو پاک فوج کے حوالے سے کسی بھی طرح کی غیرذمہ دارانہ رائے زنی سے گریز کرنا چاہیے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پاکستان میں فوج سمیت تمام ادارے اپنی اپنی حدود میں رہ کر اپنے فرائض سرانجام دے رہے ہیں۔وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کہا ہے کہ مقبوضہ جموں و کشمیر میں بھارت کے ظلم و ستم کے خلاف یوم سیاہ بھرپور طریقے سے منایا جائے گا۔ منتخب نمائندے اور کارکن کشمیریوں کے حق خود ارادیت اور بھارتی مظالم کو بے نقاب کرنے کیلئے یوم سیاہ کے موقع پر تقریبات میں بھرپور حصہ لیں۔ اراکین قومی و صوبائی اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہا کہ بھارت ظلم و جبر کے ذریعے کشمیریو ں کو حق خود ارادیت سے زیادہ دیر تک محروم نہیں رکھ سکتا۔ہم کشمیری بہن بھائیوں کی جدوجہد آزادی کو سلام پیش کرتے ہیں۔ بھارتی حکومت کو یہ بات اچھی طرح سمجھ لینی چاہیئے کہ وہ گولیوں کے ذریعے کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو نہیں کچل سکتی۔ بھارتی حکومت کی ظلم اور تشدد کی پالیسی نے کشمیری عوام کے دلوں میں آزادی کی تڑپ کو مزید جلا بخشی ہے۔ آزادی کشمیریوں کا بنیادی حق ہے اور بھارت ریاستی دہشت گردی کے ذریعے کشمیریوں کو ان کے حق خود ارادیت سے زیادہ دیر تک محروم نہیں رکھ سکتا ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کشمیریوں کی اخلاقی و سفارتی حمایت جاری رکھے گا۔وفاقی وزیر ریلویز خواجہ سعد رفیق، اراکین قومی اسمبلی پرویز ملک، مہر اشتیاق احمد، شائستہ پرویز ملک، صوبائی وزراء میاں مجتبیٰ شجاع الرحمن، ملک ندیم کامران، اراکین صوبائی اسمبلی خواجہ عمران نذیر، زعیم حسین قادری، منشاء اللہ بٹ اور دیگر منتخب نمائندے بھی اس موقع پر موجود تھے۔ وزیر اعلی پنجاب محمد شہباز شریف سے وزیر مملکت برائے پٹرولیم جام کمال نے ملاقات کی۔وزیر اعلی نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ) ن( کی حکومت کا ہر قدم ملک کی ترقی اور عوام کی خوشحالی کے لئے اٹھ رہا ہے اور اربوں روپے کے ترقیاتی منصوبے تیز رفتاری سے شفافیت کے ساتھ مکمل کئے جا رہے ہیں۔ آج پاکستان میں بہتر ہوتی ہوئی صورتحال کا اعتراف بین الاقوامی ادارے بھی کر رہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ بعض سیاسی عناصر ایک بار پھر ملک کی ترقی کا سفر روکنے کے درپے ہیں اور ان شکست خوردہ عناصر کے دھرنے بھی ناکام رہے اور آئندہ بھی ان کے عزائم پورے نہیں ہوں گے ۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم محمد نواز شریف کی قیادت میں ترقی کے سفر میں کوئی رکاوٹ نہیں آنے دیں گے ۔ وزیر مملکت نے منصوبوں میں اربوں روپے کے قومی وسائل بچانے پر وزیراعلیٰ شہبازشریف کو مبارکباد دی اور کہا کہ اربوں روپے کے وسائل کی بچت کا کریڈٹ آپ کی پرعزم قیاد ت کو جاتا ہے۔ وزیر اعلیٰ پنجاب محمدشہباز شریف نے کہا ہے کہ حالیہ بارشوں کے پیش نظر ڈینگی سرویلنس کا کام تیز کیا جائے اور ڈینگی کے مرض سے نمٹنے کے لئے متعلقہ ادارے پوری طر ح چوکس ہو کر فرائض سرانجام دیں۔ صوبائی کابینہ کمیٹی برائے انسداد ڈینگی کو ہدایات جاری کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہا کہ بارشوں کے باعث لاہور سمیت صوبے کے دیگر شہروں میں کھڑے پانی کا فوری نکاس یقینی بنایا جائے اور ڈینگی کے مرض سے نمٹنے کے لئے تمام ادارے مربوط انداز میں کام کریں۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ ڈینگی کے مرض کے روک تھام کے لئے وضع کردہ پلان پر عملدرآمد کے حوالے سے کوئی کوتاہی یا غفلت برداشت نہیں کی جائے گی۔ وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کہا ہے کہ وہ لوگ نہایت خوش قسمت ہیں جنہیں اللہ تعالیٰ اپنی مخلوق کی خدمت کا موقع فراہم کرتا ہے۔ بلدیاتی ادارے کسی بھی جمہوری نظام کیلئے کلیدی حیثیت رکھتے ہیں اور یہ ادارے مقامی سطح پر عوامی خدمت کے فریضے کی تکمیل کا بہترین ذریعہ ہیں۔ ماڈل ٹاؤن میں یونین کونسلوں کے چیئرمینوں اور وائس چیئرمینوں کے اجلاس سے خطاب کر رہے تھے۔ وزیراعلیٰ نے اپنے خطاب میں کہا کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) نے بلدیاتی انتخابات میں ریکارڈ کامیابی حاصل کی اور عوام نے پاکستان مسلم لیگ (ن) کی قیادت پر بھرپور اعتماد کا اظہار کیا اور آپ لوگوں کو ووٹ کے ذریعے کامیاب کرایا۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم محمد نوازشریف کی قیادت میں ملک ترقی، خوشحالی، امن اور روشنی کی منزل کی جانب تیزی سے بڑھ رہا ہے۔ آپ کی حکومت نے شفافیت، اعلیٰ معیار اور تیزرفتاری کو طرہ امتیاز بنایا ہے۔ پاکستان مسلم لیگ (ن) کی حکومت کا دامن کرپشن کی آلائشوں سے پاک ہے اور مخالفین بھی ہم پر انگلی نہیں اٹھا سکتے۔

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...