کراچی، گلوکو کی جونیئر لیڈرز کانفرنس اختتام پذیر

کراچی، گلوکو کی جونیئر لیڈرز کانفرنس اختتام پذیر

کراچی (اسٹاف رپورٹر ) گلو کو کی جونیئر لیڈرز کانفرنس انتہائی کامیابی کے ساتھ گزشتہ روز اختتام پذیر ہوگئی۔اس تین روزہ سالانہ لیڈرشپ کانفرنس کا انعقاد اسکول آف لیڈر شپ کی جانب سے ای بی ایم کے تعاون سے کیا گیا تھا ۔اس جونیئر لیڈرز کانفرنس کا یہ آٹھواں برس جبکہ گلوکو کے ساتھ شراکت کا تیسرا برس تھا۔کانفرنس کے اختتامی روز کے ماڈریٹر اسکول آف لیڈر شپ کے سرکردہ ٹرینر وقار علی تھے جنہوں نے کانفرنس کے بتدائی دو روز کے دوران شرکاء کو فراہم کی جانے والی معلومات کا احاطہ کیا ۔145Make a Difference146, سیشنز کے دوران وقار علی نے شرکاء کو اپنے اندر پوشیدہ ایسی صلاحیتوں اور طاقت کو تلاش کرنے سے متعلق بریف کیا جو کہ دنیا پر اثر انداز ہوسکیں،اس کے بعد شیرین نقوی،عمیر جالیا والااور ڈاکٹر معیز حسین کی سربراہی میں 145Versus to Together146, کے موضوع پر ایک پینل ڈسکشن کا اہتمام کیا گیا،اس سیگمنٹ میں والدین سے ان کے بچوں کی زندگی میں ان کے کردار سے متعلق تعمیری گفتگو کے ساتھ ساتھ بچوں سے متعلق ان کی توقعات اور مسائل پر تبادلہ خیال کیا گیا،بعد ازاں Zahrrs تھیٹر کی جانب سے شرکاء کیلئے ایک زبردست پرفارمنس کا اہتمام کیا گیا تھاجس کے بعد شرکاء کیلئے ای بی ایم رہنما ؤں کے ساتھ لنچ کا انتظام کیا گیا تھا جہاں گیلری واک میں گزشتہ دو روز کے دوران شرکاء کی جانب سے کئے گئے اسائمنٹ کا شاندار ڈسپلے بھی کیا گیا ۔منصور سومرو نے 145Change Equals to Good146,کے موضوع پر منعقدہ سیشن میں اس بات پر زور دیا کہ کسی بھی تبدیلی کو خوف کے بجائے کچھ بہتر کیلئے ہونا چاہیئے،اس کے بعد وقار علی نے کانفرنس کے دوران کی گئیں سرگرمیوں،سیشنز،فیلڈ وزٹ،پینل ڈسکشن اور ایکسرسائز کے مقاصد سے آگاہ کیا ،انہوں نے اس موقع پر شرکاء کو دیئے جانے والے سوشل ایکشن پراجیکٹ سے متعلق بھی وضاحت پیش کی جو کہ شرکاء کو سرٹیفکیٹس حاصل کرنے سے قبل مکمل کرنے ہیں۔کانفرنس کے اختتامی روز کی آخری سرگرمی 145Human of JLC146, تھی جس میں شرکاء نے ایک دوسرے کے ساتھ بات چیت کرنے اور خدا حافظ کہنے کے ساتھ ایک دوسرے کے ساتھ تصاویر بھی بنائی۔اس برس کانفرنس کو لیڈ کرنے والی انمول زہرہ کیلئے گزشتہ چند ماہ انتہائی محنت کرتے ہوئے گذرے اور اس موقع پر ان کا کہنا تھا کہ وہ اپنی ٹیم کی انتہائی شکر گذار ہیں جن کی مدد اور تعاون سے یہ کانفرنس یادگار رہی،اختتامی تقریب کی میزبانی انمول زہرہ اور وقار علی نے کی جس میں شرکاء سے امید ظاہر کی کہ اس تین روزہ کانفرنس میں انہوں نے جو کچھ سیکھا ہے اس سے وہ نہ صرف اپنی زندگیوں کو مزیر بہتر بنائیں گے بلکہ زیادہ باشعور اور سمجھدار نوجوان کی حیثیت سے اپنے تجربات سے دوسروں کو بھی مستفید کرینگے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر