کشمیر میں گیارہویں روز بھی کرفیو،مظاہرے،کشیدگی

کشمیر میں گیارہویں روز بھی کرفیو،مظاہرے،کشیدگی
کشمیر میں گیارہویں روز بھی کرفیو،مظاہرے،کشیدگی

  

سری نگر(مانیٹرنگ ڈیسک)وادی کشمیر میں نوجوان حریت رہنما برہان وانی کی شہادت کے بعد شروع ہونے والی کشیدگی میں کمی نہ آسکی،گیارہویں روز بھی کرفیو کے باوجود کشمیریوں کی جانب سے احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ جاری رہا۔جبکہ دنیاکوبھارتی مظالم پر اندھیرے میں رکھنے کیلئے مقبوضہ وادی میں اخبارات کی ترسیل کا عمل بھی روک دیا گیا ۔

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

نجی ٹی وی اورکشمیر میڈیا سروس کے مطابق برہان وانی کی شہادت کے بعد عوامی احتجاج کے پیش نظر مقبوضہ وادی کے مختلف علاقوں میں مسلسل گیارہویں روز بھی کرفیو نافذ رہا۔پابندیوں کے باوجود کشمیریوں کی بڑی تعدادنے آزادی کے حق میں بھارتی فوج کے خلاف احتجاجی مظاہرے کئے۔ سری نگر،کپواڑا، گاندربل، بڈگام، پلوامہ، ککپورہ ، اونتی پورہ اور شوپیاں سمیت مختلف قصبوں میں ہونے والے مظاہروں کے دوران قابض بھارتی فوج کی فائرنگ سے مزید 8 افراد زخمی ہوگئے ہیں جو کہ مختلف ہسپتالوں میں زیر علاج ہیں۔

روزنامہ پاکستان کی خبریں اپنے ای میل آئی ڈی پر حاصل کرنے اور سبسکرپشن کیلئے یہاں کلک کریں

دوسری جانب بھارتی انتظامیہ اور مقامی کٹھ پتلی حکومت نے دنیا کو وادی کے حالات سے متعلق لاعلم رکھنے کے لیے انٹرنیٹ، موبائل فون سروس اور اخباروں کی اشاعت پر بھی پابندی عائد کررکھی ہے۔ جس کی وجہ سے وادی میں مسلسل تیسرے روز بھی کوئی اخبار شائع نہیں ہوا۔

واضح رہے کہ 8 جولائی کو بھارتی فوج کے ہاتھوں برہان وانی کی شہادت کے بعد مقبوضہ کشمیر میں عوام نے نئے عزم کے ساتھ آزادی کے لئے اپنی جدو جہد کا آغاز کیا ہے، گزشتہ 10 روز کے دوران مظاہروں اور احتجاج پر بھارتی فوج کی فائرنگ سے 45 افراد شہید جب کہ 2 ہزار 500 سے زائد زخمی ہوچکے ہیں۔

مزید : آزاد کشمیر /اہم خبریں