ریپبلکن پارٹی کا کنونشن، ڈونلڈ ٹرمپ کے استقبال کیلئے 100 خواتین نے اپنے کپڑے اتار کر شیشے اٹھالئے، اس شرمناک استقبال کی وجہ ایسی کہ جان کر آپ بھی حیرت میں ڈوب جائیں گے

ریپبلکن پارٹی کا کنونشن، ڈونلڈ ٹرمپ کے استقبال کیلئے 100 خواتین نے اپنے کپڑے ...

نیویارک (نیوز ڈیسک) امریکی صدارتی امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ کے متعلق کوئی اچھی اور شریفانہ بات کم ہی سننے کو ملتی ہے۔ کبھی وہ اپنی زہر بھری باتوں کی وجہ سے خبروں کا موضوع بنتے ہیں تو کبھی ان کے نفرت پر مبنی نظریات تنقید کا نشانہ بنتے ہیں۔ گزشتہ روز وہ کلیو لینڈ میں منعقد ہونے والی ریپبلکن پارٹی کے نیشنل کنونشن میں پہنچے تو ایک بار پھر ایک ایسا شرمناک واقعہ پیش آگیا کہ ڈونلڈ ٹرمپ کے پہلے سے مسخ شدہ چہرے کو اور مسخ کر گیا۔

گلیمر میگزین کی رپورٹ کے مطابق ڈونلڈ ٹرمپ کنونشن میں شرکت کے لئے پہنچے تو ان کا استقبال 100 خواتین پر مشتمل ایک خصوصی دستے نے کیا، لیکن اہم بات یہ تھی کہ یہ تمام خواتین مکمل طور پر برہنہ تھیں۔ کسی سیاسی رہنما کے ایسے عریاں اور بے حیائی پر مبنی استقبال کی مثال شاید ہی کہیں اور مل سکے۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ ان خواتین کا تعلق ڈونلڈ ٹرمپ یا ان کی پارٹی سے نہیں تھا، لیکن ان کے متنازعہ خیالات اور کردار کا نتیجہ تھا کہ ان خواتین کی بے حیائی بھی ڈونلڈ ٹرمپ کے ساتھ منسلک ہوگئی۔ دراصل یہ خواتین ایک آرٹ پراجیکٹ کا حصہ تھیں جس کا اہتمام فوٹوگرافر سپینسر ٹیونک نے کیا تھا۔ ٹیونک کا کہنا ہے کہ وہ خواتین کی آزادی، مساوات اور فطرت سے ان کے لگاﺅ کے جذبات کو نمایاں کرنا چاہتے تھے۔ انہوں نے اس پراجیکٹ کا اہتمام ڈونلڈ ٹرمپ کی آمد کے موقع پر اس لئے کیا کہ وہ خواتین کے متعلق ان کے بیانات اور نظریات کو بھی چیلنج کرنا چاہتے تھے۔ ٹیونک کہتے ہیں کہ ڈونلڈ ٹرمپ خواتین کے حوالے سے متنازعہ نظریات رکھتے ہیں اور انہیں حقارت کی نظر سے دیکھتے ہیں جبکہ ایسے اقدامات کے بھی حق میں ہیں کہ جو خواتین کے لئے امتیازی قرار دئیے جاسکتے ہیں۔

ڈونلڈ ٹرمپ کا استقبال کرنے والی 100 خواتین کے جسموں پر لباس نام کی کوئی چیز نہ تھی۔ البتہ ان میں سے ہر ایک نے اپنے ہاتھوں میں ایک بڑا شیشہ اٹھارکھا تھا۔ خواتین کا کہنا تھا کہ وہ شیشے سے سورج کی روشنی کو منعکس کرتے ہوئے پیغام دے رہی تھیں کہ خواتین سورج، تازہ ہوا اور سرسبز و شاداب درختوں کا عکس ہیں۔ برہنہ خواتین کے ہاتھوں میں پکڑے شیشوں سے منعکس ہوتی روشنی کے ذریعے یہ پیغام دینے کی کوشش بھی کی گئی کہ خواتین اپنے اردگرد کے ماحول اور دنیا کا عکس ہیں، لہٰذا انہیں بے جا مورد الزام ٹھہرانا درست نہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...