’ میں نے دفتر میں کام کرنے والے ایک لڑکے کو چندلمحے کیلئے اپنا فون دیا، پھر جب استعمال کیا تو یہ دیکھ کر پیروں تلے زمین نکل گئی کہ میرے فون سے۔۔۔‘ عرب خاتون نے پولیس کو ایسی شرمناک بات بتا دی کہ جان کر آپ کسی کو اپنے فون کو ہاتھ بھی نہ لگانے دیں گے

’ میں نے دفتر میں کام کرنے والے ایک لڑکے کو چندلمحے کیلئے اپنا فون دیا، پھر ...
’ میں نے دفتر میں کام کرنے والے ایک لڑکے کو چندلمحے کیلئے اپنا فون دیا، پھر جب استعمال کیا تو یہ دیکھ کر پیروں تلے زمین نکل گئی کہ میرے فون سے۔۔۔‘ عرب خاتون نے پولیس کو ایسی شرمناک بات بتا دی کہ جان کر آپ کسی کو اپنے فون کو ہاتھ بھی نہ لگانے دیں گے

  

دبئی سٹی (مانیٹرنگ ڈیسک) موبائل فون انتہائی ذاتی نوعیت کی چیز ہے جس کی ہمہ وقت حفاظت نہ کی جائے تو ایسے افسوسناک واقعے کا بھی سامنا کرنا پڑ سکتا ہے جو دبئی میں ایک نوجوان خاتون کے ساتھ ساتھ پیش آگیا۔ 

گلف نیوز کی رپورٹ کے مطابق خاتون نے اپنا موبائل فون بس چند لمحوں کیلئے دفتر میں ایک ساتھی مرد کو دیا تھا، لیکن اس نے اتنے میں ہی خاتون کا واٹس ایپ اکاؤنٹ ہیک کر لیا۔ پولیس کو کی گئی شکایت میں خاتون نے بتایا کہ اس کا واٹس ایپ اکاؤنٹ ہیک ہو گیا ہے اور کوئی اس کے پرائیویٹ میسجز اور تصاویر تک رسائی حاصل کر رہا ہے، لیکن اسے معلوم نہیں تھا کہ یہ کام کس نے کیا۔

جب پولیس نے تحقیقات کیں تو پتہ چلا کہ خاتون کے ایک ساتھی مرد نے یہ کام کیا تھا جس کے ہاتھ خاتون کا فون محض چند لمحوں کیلئے ہی لگا تھا ۔ پولیس کے سائبر کرائم ڈیپارٹمنٹ نے خاتون سے پوچھا کہ اس نے کسی کو اپنا موبائل فون دیا تو نہیں تھا۔جب اس نے بتایا کہ فون ایک ساتھی ورکر کو چند منٹ کیلئے دیا تھا کیونکہ وہ انٹرنیٹ پر کچھ سرچ کرنا چاہ رہا تھا تو پولیس نے مذکورہ شخص کو بلا لیا۔ جب اس کے موبائل فون اور کمپیوٹر کا معائنہ کیا گیا تو پتہ چلا کہ اسی نے خاتون کا واٹس ایپ اکاؤنٹ ہیک کیا تھا اور وہ چوبیس گھنٹے اس کے میسجز اور تصاویر پر نظر رکھے ہوئے تھا۔

بدبخت شخص نے خاتون کے واٹس ایپ اکاؤنٹ میں کچھ تبدیلیاں کر دی تھیں جس کے بعد وہ اس کے اکاؤنٹ کو اپنے موبائل فون اور کمپیوٹر کی سکرین پر دیکھ سکتا تھا اور اس میں ہونے والی ہر ایکٹویٹی ، میسج اور تصویر کو بھی دیکھ سکتا تھا۔ دبئی پولیس کی جانب سے اس واقعے کے تناظر میں شہریوں کو خبردار کیا گیا ہے کہ وہ اپنے موبائل فون اور سوشل میڈیا اکاؤنٹس کی مکمل حفاظت کریں اور اس ضمن میں کسی پر ایک لمحے کیلئے بھی اعتبار نہ کریں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس