جرمانے اور دیت کی رقم نہ ہونے پر پنجاب کی جیلوں میں سزا پوری کرنیوالے درجنوں قیدی رہائی کے منتظر

جرمانے اور دیت کی رقم نہ ہونے پر پنجاب کی جیلوں میں سزا پوری کرنیوالے درجنوں ...

لاہور(رپورٹ: یو نس با ٹھ) پنجا ب بھر میں درجنوں قیدی سزا ئیں پوری ہو نے کے با وجود غربت کی وجہ سے صرف چند ہزار روپے کا جرمانہ ادا نہ کرنے کی وجہ سے قید و بند کی صعوبتیں برداشت کر رہے ہیں ۔ان قیدیوں میں 80 فیصد کی عمریں 25 سے 40 سال کے درمیان جبکہ 140سے زائد قیدی جرمانہ اور دیت کی رقم ادا نہ کرنے کے باعث سزائیں پوری ہونے کے باوجود مختلف جیلوں میں بند ہیں۔ محکمہ جیل خا نہ جا ت نے مخیر حضرات سے اپیل کی ہے کہ ان کی رقم جمع کروادی جا ئے تا کہ رہا ئی کا عمل مکمل ہو سکے۔ تفصیلات کے مطابق پنجاب کی مختلف جیلوں میں 80 قیدی ایسے ہیں جو جرمانہ ادا نہ کرنے کی وجہ سے جیلوں میں بند ہیں جن میں سے متعدد کا جرمانہ صرف چند ہزار روپے بنتا ہے، غربت کے باعث ان کے لواحقین رقم ادا نہیں کر سکتے۔ اسی طرح 60 قیدی ایسے ہیں جو دیت کی عدم ادائیگی کی وجہ سے جیلوں میں بند ہیں۔ ان قیدیوں میں 80 فیصد کی عمریں 25 سے 40 سال کے درمیان ہیں۔ روزنامہ پا کستان کو موصول ہونے والی دستاویزات کے مطابق اڈیالہ جیل راولپنڈی میں جرمانہ کے 10اور دیت کے 5 قیدی، کوٹ لکھپت جیل میں جرمانے کے 4اور دیت کے 5، ڈسٹرکٹ جیل ملتان میں جرمانے کے 8 اور دیت کے 3، ڈسٹرکٹ جیل فیصل آباد میں جرمانے کے 6 اور دیت کے 2، ڈسٹرکٹ جیل گجرات میں جرمانے کے 5اور دیت کا 2،ڈسٹرکٹ جیل بہاولنگر میں جرمانے کا ایک اور دیت کے 8، ڈسٹرکٹ جیل میانوالی میں جرمانے کے 3 اور دیت کا ایک، ڈسٹرکٹ جیل جہلم اور سنٹرل جیل فیصل آباد میں 5، ڈسٹرکٹ جیل سرگودھا میں 5، سنٹرل جیل بہاولپور میں 4 قیدیوں سمیت دیگر سنٹرل و ڈسٹرکٹ جیلوں میں بھی ایسے متعدد قیدی بند ہیں۔ جیل ذرائع کے مطابق چند ہزار روپے جرمانہ ادا نہ کرنیوالے یہ بے بس قیدی منتظر ہیں کہ حکومت یا مخیر حضرات ان کے جرمانے ادا کر کے رہا کرا دیں۔ اس حوالے سے آئی جی جیل خانہ جات میاں فاروق نذیر نے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہماری کوشش ہے کہ جرمانہ ادا نہ کرنے کی وجہ سے جیلوں میں بند قیدی رہا ہو جائیں تاہم مخیرحضرات پنجا ب کی مختلف جیلو ں میں رقم بھجواکر جر ما نے ادا کر تے ہیں اگر مخیر حضرات نے جر ما نے جمع کروا دیے تو سب کی رہا ئی عمل میں لا ئی جا ئے گی۔

مزید : صفحہ آخر