دبئی کی لاءفرم نے سپریم کورٹ میں کیپٹل ایف زیڈ ای کمپنی میں نوازشریف کی ملازمت کی دستاویزات کی تصدیق کر دی

دبئی کی لاءفرم نے سپریم کورٹ میں کیپٹل ایف زیڈ ای کمپنی میں نوازشریف کی ...
دبئی کی لاءفرم نے سپریم کورٹ میں کیپٹل ایف زیڈ ای کمپنی میں نوازشریف کی ملازمت کی دستاویزات کی تصدیق کر دی

  

دبئی (ڈیلی پاکستان آن لائن )دبئی کی لاءفرم نے وزیراعظم نوازشریف کی دبئی میں مبینہ نوکری کے حوالے سے سپریم کورٹ آ ف پاکستان میں قانونی رائے جمع کروا ئی ہے ،جس میں انہوں وزیراعظم کے کیپٹل ایف زیڈ ای کمپنی کے ملازم ہونے کے دستاویزات کی تصدیق کر دی ہے ۔

’خلیج ٹائمز ‘ کے مطابق پاناما کیس کی تحقیقات کرنے والی جے آئی ٹی نے دبئی کی قانونی لاءفرم خلیفہ بن حووادین ایڈوکیٹس کا تعاون بھی حاصل کیا تھا ۔وکیل اور لیگل ایڈوائزر خلیفہ بن حووادین کا کہناہے کہ رپورٹ پیر کے روز سپریم کورٹ میں جمع کروائی گئی ہے ۔خلیفہ لاءفرم کا نتیجہ نوازشریف اور کیٹپل ایف زیڈ ای کے درمیان ہونے والے لیبر کنٹریکٹ کی دستاویزات پر منحصر ہے اور ان کا کہناہے کہ یہ معاہدہ 100 فیصد درست اور قانونی ہے ۔

شریف خاندان کی جانب سے کیپٹل ایف زیڈ ای سے تنخواہ لینے سے انکار کر دیاگیا تھا اور موقف اختیار کیا گیا تھا کہ اس ویزے کا مقصد صرف دورہ یو اے ای کے دوران سہولیات حاصل کرنا تھا ۔تاہم متحدہ عرب امارات کے لیبر قوانین کے مطابق تمام ملازمین پر یہ لازم ہے کہ وہ بینک اکاﺅنٹ کے ذریعے اپنی تنخواہ حاصل کریں ،متحدہ عرب امارات کے ویج پروٹیکشن سسٹم کے تحت اگرکمپنی اس میں ناکام ہو تی ہے تواسے بلیک لسٹ کرتے ہوئے بند کیا جا سکتا ہے۔متحدہ عرب امارات کے قوانین کے مطابق اگر بینک میں تنخواہوں کی منتقلی کا کوئی ریکارڈ نہیں ملتا تو آجر ذمہ دار قرار پاتا ہے نہ کہ ملازم،تاہم یہ بات واضح نہیں ہو سکی ہے کہ کیپٹل ایف زیڈ ای کو تحلیل کرنے سے پہلے اس کا مالک کون تھا ۔

مزید : قومی