محکمہ اینٹی کرپشن کو پروفیشنل،تربیت یافتہ تحقیقاتی افسران کی کمی کا سامنا ہے،سید اعجاز حسین

  محکمہ اینٹی کرپشن کو پروفیشنل،تربیت یافتہ تحقیقاتی افسران کی کمی کا سامنا ...

لاہور(اپنے نمائندے سے)محکمہ اینٹی کرپشن پنجاب نے اپنی 3 ماہ کی کارکردگی رپورٹ تیار کر لی، رپورٹ ڈی جی اینٹی کرپشن پنجاب سید اعجاز حسین شاہ نے وزیر اعظم عمران خان کو پیش کریں گے۔ ڈی جی اینٹی کرپشن کی زیر صدارت صوبہ بھرکے ریجنل ڈائریکٹرز کا اہم اجلاس ہوا ڈی جی اینٹی کرپشن سید اعجاز شاہ نے تسلیم کیا کہ اینٹی کرپشن کو پروفیشنل، تربیت یافتہ تحقیقاتی افسران کی کمی کا سامنا ہے۔استعداد کار بڑھانے کیلئے ٹریننگ کروا رہے ہیں،لیکن تجربہ کار افسران کی کمی کے باوجود 3ماہ کے دوران 16 ارب کی ریکوری کروا چکے ہیں۔ ڈائریکٹر جنرل اینٹی کرپشن پنجاب سید اعجاز شاہ نے 9ریجنل ڈائریکٹوریٹس کی 3ماہ کی کارکردگی کا جائزہ لیا اور ہدایات جاری کیں ڈی جی نے تمام  ریجنل ڈائریکٹرز کو ہدایت کی کہ سرکاری رقبوں پر قابض مافیا کے خلاف بلا امتیاز کریک ڈاؤن کیا جائے، اینٹی کرپشن کا مقصد کسی کا بھی استحصال کرنا نہیں لیکن قصوروار سے رعائیت بھی نہیں برتیں گے، اجلاس میں ڈی جی اینٹی کرپشن نے افسران کو حکم دیا کہ 10دن میں مجرمانہ نوعیت اور بے ضابطگیوں کی انکوائریوں کی فہرستیں مکمل کی جائیں اور بلا تفریق کاروائی کو منطقی انجام تک پہنچایا جائے، اجلاس میں ایڈیشنل ڈی جی اینٹی کرپشن عبدالرب سمیت صوبہ بھر کے ڈائریکٹرز نے شرکت کی اور اپنے ریجن کی کارکردگی سے افسران کو اگاہ کیا.

محکمہ اینٹی پرپشن

مزید : صفحہ آخر


loading...