وزیراعلیٰ نے ایگز یکٹوآرڈرکااستعمال کرکے عوامی حقوق پر سودے بازی کی، ثمرہارون بلور

وزیراعلیٰ نے ایگز یکٹوآرڈرکااستعمال کرکے عوامی حقوق پر سودے بازی کی، ...

پشاور (سٹی رپورٹر) عوامی نیشنل پارٹی کی رکن صوبائی اسمبلی ثمر ہارون بلور نے وزیر اعلیٰ کی جانب سے وزیر خزانہ کے حلقے پر خصوصی نوازشات کے خلاف پشاور ہائیکورٹ کے فیصلے پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ وزیر اعظم کی ہدایت کے باوجود وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا نے صوبائی وزیر خزانہ کے حلقے پی کے73پر خصوصی نوازشات کی بارش کر دی اور 28کروڑ کے فنڈز جاری کر دیئے،جو کسی صورت قابل قبول نہیں، اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ عدالت پہلے ہی فنڈز کا اجرا روک چکی ہے تاہم وزیر اعلیٰ نے ایگزیکٹو آرڈر کے ذریعے فنڈز جاری کر کے آئین کی خلاف ورزی اور عدالتی فیصلے کو بائی پاس کیا ہے، انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا کا یہ اقدام عوام کے حقوق پر سودے بازی کے زمرے میں آتا ہے، دہشت گردی سے متاثرہ صوبے کے بیشتر اضلاع کو نظر انداز کر کے صرف منظور نظر وزیر کے حلقے پر نوازشات کسی طور قابل برداشت نہیں، انہوں نے کہا کہ اے این پی کے ارکان اسمبلی خوشدل خان ایڈوکیٹ اور صلاح الدین خان سمیت ہم نے عدلت عالیہ کا دروازہ کھٹکھٹایا جس پر پشاور ہائیکورٹ نے رٹ پر فیصلہ سناتے ہوئے فنڈز کے اجراء پر حکم امتناع جاری کر دیا ہے، انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی حکومت میں اقربا پروری عروج پر ہے اور اپوزیشن ممبران کے حلقوں کو نظر انداز کر کے صرف حکومتی ممبران کو نوازا جا رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ اے این پی عوام کے حقوق کیلئے میدان عمل میں موجود ہے اور کسی کو عوام کے حقوق غصب نہیں کرنے دے گی۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...