پولیو کا شکار بچے کا انتقال

پولیو کا شکار بچے کا انتقال

  

وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے لاہور میں تین سالہ بچے میں پولیو وائرس کی تشخیص اور اس کی وفات کے حوالے سے تفصیلی رپورٹ طلب کی ہے اور ہدایت کی ہے کہ اس ماہ کے آخری ہفتے سے شروع ہونے والی پولیو مہم کو مکمل کامیابی سے ہمکنار کیا جائے، پولیو نامراد مرض ہے، جو انسان کو معذور بنا دیتا ہے اور اس کی ساری زندگی عذاب میں گذرتی ہے۔ اس مرض سے بچاؤ کے لئے ویکسین کب کی بن چکی جو پانچ سال کی عمر تک کے بچوں کو پلائی جاتی ہے، بڑے شہروں میں تو بچوں کے لئے حفاظتی ٹیکے اور ویکسین لازم ہوتی ہے،خصوصاً جو بچے ہسپتالوں میں پیدا ہوتے ہیں، ان کے لئے چارٹ بھی بن جاتا ہے، اب یہ والدین پر منحصر ہے کہ وہ پابندی سے یہ حفاظتی کورس مکمل کرائیں، جو خناق، تپ دِق، نمونیہ اور پولیو جیسے مرض کے لئے ہوتا ہے،اس سلسلے میں تشہیری مہم بھی جاری رہتی ہے،اس کے باوجود بعض والدین ذمہ داری کا احساس نہیں کرتے۔پاکستان میں ایک وقت تھا کہ اسے پولیو فری گنا جاتا تھا،لیکن اب صورتِ حال یہ ہے کہ سفری ضروریات میں سے ایک یہ بھی ہے کہ مسافر کے پاس پولیو قطرے پینے کا سرٹیفکیٹ ہونا چاہئے۔یہ اطلاع اور بھی تشویشناک ہے کہ ایک معصوم بچہ پولیو کا شکار ہو کر اللہ کو پیارا ہو گیا،شاید یہ اپنی نوعیت کا پہلا کیس ہے، عوام اور حکومت کو مکمل تعاون کے ساتھ اس مرض کے خلاف جنگ جاری رکھنا ہو گی اور اپنی آنے والی نسلوں کو معذوری سے بچانا ہو گا۔

مزید :

رائے -اداریہ -