ڈریپ اور حکومت ادویات کی قیمتیں کنٹرول کرنے کیلئے سخت اقدامات اٹھائیں: لاہور ہائیکورٹ

ڈریپ اور حکومت ادویات کی قیمتیں کنٹرول کرنے کیلئے سخت اقدامات اٹھائیں: لاہور ...

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ کے مسٹر جسٹس ساجد محمود سیٹھی نے کورونا وائرس کا پھیلاؤ روکنے کے اقدامات،پرائیویٹ ہسپتالوں کو ریگولیٹ کرنے، آکسیجن سلنڈر اور ادویات کی سستے داموں فروخت کے لئے دائر درخواست پرڈریپ اور دیگر متعلقہ حکام کوقیمتوں میں کمی یقینی بنانے کے لئے ضروری اقدامات کا حکم دیتے ہوئے 3دن میں رپورٹ طلب کرلی،دوران سماعت فاضل جج نے ایکٹمرا انجکشن کی بلیک میں فروخت پر برہمی کا اظہارکرتے ہوئے ریمارکس دئیے کہ وفاقی وزیر کو بلیک میں انجکشن خریدنا پڑا توعام عوام کے ساتھ کیا ہورہاہوگا،کورونا کی ادویات کی قیمتیں کنٹرول کرنے کے لئے اقدامات نہیں کئے گئے،ڈریپ اور حکومت کو ادویات کی قیمتیں کنٹرول کرنے کے لئے سخت اقدامات کرنے ہوں گے،فاضل جج نے مزید کہا کہ پرائیوٹ ہسپتالوں میں قیمتیں آسمانوں سے باتیں کر رہی ہیں، کوئی پوچھنے والا نہیں،پرائیویٹ ہسپتالوں میں علاج کے نام پر لاکھوں روپے روزانہ کے وصول کئے جا رہے ہیں، عدالت کو بتایا جائے کہ حکومت اور ڈریپ نے پرائیویٹ ہسپتالوں کے خلاف کیا کارروائیاں کی ہیں؟ حکومت اور ڈریپ کو پرائیویٹ ہسپتالوں کے خلاف بھی کارروائی کرنی چاہیے، کس طرح پرائیویٹ ہسپتالوں کو کنٹرول کیا جاتا ہے اور ان کے لئے کیا ایس او پیز ہیں؟ عدالت نے وفاقی حکومت اور ڈریپ سمیت دیگر اداروں کو قیمتوں میں کمی یقینی بنانے کے احکامات جاری کر تے ہوئے 3دن میں ڈریپ اور پنجاب حکومت سے رپورٹ طلب کرلی ہے،عدالت نے یہ کارروائی جوڈیشل ایکٹوازم پینل کی طرف سے دائر درخواست پرکی ہے،درخواست میں وفاقی حکومت سمیت دیگر کو فریق بناتے ہوئے موقف اختیار کیا گیاہے کہ کورونا وائرس کے علاج کے لئے ابھی تک پرائیویٹ ہسپتالوں کو ریگولیٹ نہیں کیا گیا، پرائیویٹ ہسپتالوں کو ریگولیٹ نہ کرنے کی وجہ سے لوگ مہنگا علاج کرانے پر مجبور ہیں، آکسیجن سلنڈر اور ادویات مہنگے داموں فروخت کی جا رہی ہیں، کورونا وائرس کے علاج کی کچھ ادویات اب بھی میڈیکل سٹورز سے غائب ہیں، حکومت کو سستے علاج کے لئے پرائیویٹ ہسپتالوں کو ریگولیٹ کرنے اورآکسیجن سلنڈر و ادویات کی سستے داموں دستیابی کو یقینی بنانے کا حکم دیاجائے۔

اقدامات اٹھائیں

مزید :

صفحہ آخر -