سرکاری سکولوں کیلئے کتابوں کی خریداری میں کرپشن کا انکشاف

سرکاری سکولوں کیلئے کتابوں کی خریداری میں کرپشن کا انکشاف

  

ملتان(سٹاف رپورٹر)پنجاب کے سرکاری سکولوں کیلئے کتابوں کی خریداری میں مبینہ کرپشن کا انکشاف ہوا ہے، سکولوں کیلئے 3 لاکھ سے زائد کتب کی خریداری کیلئے من پسند 4 پبلشرز کی 264 کتابوں کو چنا گیا ہے- بتایا گیا ہے کہ برطانیہ کے امدادی ادارے ڈیفیڈ کی جانب سے حکومت پنجاب کو سرکاری سکولوں کیلئے کتابوں، فرنیچر اور دیگر ضروری اشیاء کی خریداری کیلئے تین ارب روپے کی گرانٹ دی گئی ہے اس گرانٹ کو من پسند پبلشرز کو نوازنے کا انکشاف ہوا ہے(بقیہ نمبر2صفحہ6پر)

۔ محکمہ تعلیم سکولزپنجاب نے مڈل اور میٹرک جماعت کے بچوں کیلئے خلاف ضابطہ کتابوں کا انتخاب کیا ہے اور من پسند پبلشر کو کتابیں دی گئی ہیں‘ ہر ضلع کے چالیس چالیس سکولوں کو کتابوں کی فراہمی کیلئے منتخب کیا گیا ہے جس پر ڈیڑھ ارب روپے سے زائد رقم خرچ کی جا رہی ہے۔ محکمہ سکولز ایجوکیشن کے ذیلی ادارے پی ایم آئی یو نے پبلشرز سے کتابوں کی فہرستیں طلب کرنے کی بجائے من پسند پبلشرز کی کتابوں کا خود انتخاب کر لیاہے۔ دستاویز کے مطابق ہر ضلع میں آٹھویں اور میڑک جماعت کے بچوں کیلئے 22 ہزار سے زائد ناولز اور افسانوں کی کتابیں خریدی جا رہی ہیں، فہرست کے مطابق بچوں کیلئے دیوان غالب، امراؤ جان، ہند یاترا، پولٹری فارمنگ، شاعری، مہنگی ڈکشنریاں، افسانے، لوک کہانیاں، انگریزی ڈراموں کا انتخاب کیا ہے۔

انکشاف

مزید :

ملتان صفحہ آخر -