پیف پارٹنرز کو عدم ادائیگی، پنجاب حکومت کی عدم توجہی سے لاکھوں طالب علموں کا مستقبل داو پر لگ گیا

پیف پارٹنرز کو عدم ادائیگی، پنجاب حکومت کی عدم توجہی سے لاکھوں طالب علموں کا ...
پیف پارٹنرز کو عدم ادائیگی، پنجاب حکومت کی عدم توجہی سے لاکھوں طالب علموں کا مستقبل داو پر لگ گیا

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) پنجاب ایجوکیشن فاونڈیشن (پیف) سے منسلک اسکولوں کے مالکان اور اساتذہ محکمے کی جانب سے مسلسل چھ ماہ سے رقم  کی عدم ادائیگی یا بے تحاشہ کٹوتیوں کی وجہ سے انتہائی اذیت اور بے چینی کا شکار ہیں۔

چیئرمین پیف پارٹنرز اتحاد(رحیمیارخان) مسعود الحسن سعیدی کاکہنا ہے کہ پنجاب حکومت بعض حالات میں محض تیس فیصد تک ادائیگیاں کرتی ہے۔ پنجاب حکومت کی جانب سے عید الفطر پر بھی کوئی ادائیگی نہیں کی گئی جب کہ عید قرباں سر پر ہے مگر حکومت کی جانب سے تاحال کوئی ادائیگی نہیں کی گئی ہے۔ حکومتی عدم توجہی کی وجہ سے تیس لاکھ بچوں کا مستقبل داو پر لگ گیا ہے۔

انہوں نے کہا بیشتر سکولوں کی عمارتیں کرائے پر ہیں جس کی وجہ سے سکول مالکان پر عمارتیں خالی کرانے کے حوالے سے مسلسل دباو بڑھ رہا ہے جب کہ کئی مقامات پر سکول خالی بھی کروالیے گئے ہیں۔

پنجاب ایجوکیشن کی جانب سے فنڈز جاری  نہ ہونے کی وجہ سے سکول مالکان اپنے معزز اساتذہ کو تنخواہیں جاری نہیں کرسکے جس کی وجہ سے سیکڑوں خاندان ہیجانی کیفیت کا شکار ہیں۔

اس موقع پر مسعود الحسن سعیدی اور پیف پارٹنر اتحاد کے دیگر رہنما جن میں ملک نصیر فیض، اختر علی خاور  ، چوہدری خالد اور دیگر نے لاہور میں دیئے گئے دھرنے کے بعد وزیراعظم عمران خان، وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار اور مراد راس سے اپیل کی ہے کہ وہ خصوصی توجہ دیں اور مسائل میں گھرے اساتذہ اور سکول مالکان کے اس مسئلے کو ترجیحی بنیادوں پر حل کریں۔

پف پارٹنرز نے اپنے چار مطالبات پیش کرتے ہوئے اپیل کی ہے کہ پانچ سال سے فیس نہ بڑھائے جانے کے معاملے کا فوری نوٹس لیا جائے، پرائمری کی فیس ایک ہزار، مڈل کی پندرہ سو جب کہ ہائی سکول کی دو ہزار روپے ماہانہ کی جائے۔

اپریل دوہزار سترہ کے سرکلر کے مطابق تمام سکولوں کو ان کی استعداد کے مطابق سارا سال نئے داخلوں کی مکمل آزادی دی جائے۔

ہر ماہ سکول کے سٹوڈنٹ انفارمیشن سسٹم پر موجود تعداد کے مطابق ادائیگی کی جائے اور گزشتہ ڈھائی سال سے عدم اداشدہ فیسیں اور بقایاجات اداکیے جائیں۔

پیف کی جانب سے داخل شدہ طلبہ و طالبات کے فارم ب کی فراہمی کے مطالبے کو تیس جون دوہزار اکیس تک موخر کیاجائے۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -