ام دوست اور ٹیکس فری بجٹ نے دل جیت لئے ورلڈ بینک اور ائی ایم ایف کا بجٹ

ام دوست اور ٹیکس فری بجٹ نے دل جیت لئے ورلڈ بینک اور ائی ایم ایف کا بجٹ

  



عو                لاہور (جنرل رپورٹر) مختلف سیاسی ومذہبی جماعتوں سے تعلق رکھنے والی سیاسی شخصیات نے پنجاب حکومت کے پہلے بجٹ میں اظہار خیال کرتے ہوئے حکومتی اراکین اسمبلی نے کہا ہے کہ پنجاب حکومت کا پہلا صوبائی بجٹ عوام دوست ٹیکس فری ہے۔ پہلی مرتبہ وڈیروں جاگیرداروں اور امیروں کو ٹیکس نیٹ میں لایا گیا ہے جبکہ دوسری طرف جماعت اسلامی تحریک انصاف اور پاکستان مسلم لیگ (ق) کے پارلیمانی رہنماﺅں نے صوبائی بجٹ کو الفاظ کا گورکھ دھندہ قرار دیاہے۔ رکن پنجاب اسمبلی رانا محمد ارشد نے کہا کہ پنجاب حکومت کا پہلا بجٹ عوامدوست اور ٹیکس فری ہے۔ جاگیرداروں اور وڈیروں اور امیر زادوں کو ٹیکس نیٹ میں لا کر غریبوں پر ٹیکس کا بوجھ نہیں ڈالا گیا۔ 2 رکنی قومی اسمبیل شیخ روحیل اصغر، شاہد گھمن اراکین اسمبلی وحید گل، ملک وحید اور سابق ایم پی اے حاجی اللہ رکھا نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کی پنجاب حکومت نےمرکز کے بعد صوبائی بجٹ سے بھی عوام کے دل جیت لئے ہیں۔ تحریک انصاف لاہور کے صدر عبدالعلیم خان اور رکن پنجاب اسمبلی مراد راس نے کہا کہ صوبائی بجٹ بھی مرکز کے بجٹ کی طرح الفاظ کا گورکھ دھندہ ہے۔ اسے غریب کا بجٹ قرار نہیں دیا جاسکتا۔ تحریک انصاف لاہور کے سابق جنرل سیکرٹری رشید بھٹی نے کہا کہ بجٹ میں عوام کو ریلیف ملنا چاہئے تھا یکم جولائی کے بعد پتہ چلے گا کہ یہ عوام کا بجٹ ہے یا ورلڈ بینک کا یا آئی ایم ایف کا ہے۔ جماعت اسلامی کے رہنما امیر العظیم نے کہا کہ اور مسلم لیگ (ق) کے صوبائی جنرل سیکرٹری چودھری ظہیر الدین خان نے کہا کہ پنجاب حکومت کا بجٹ کسی طرح سے بھی عوام دوست نہیں۔ یہ آئی ایم ایف اور ورلڈ بینک کی ہدایات کی روشنی میں تیار کیا گیا۔ پیپلز پارٹی لاہور کی صدر ثمینہ گھرکی نے کہا کہ پنجاب نے بھی وفاق کے نقش قدم پر چلتے ہوئے عوام دوست نہیں عوام دشمن بجٹ دیاہے جسے ہم مسترد کرتے ہیں۔ بجلی بحران کو ختم کرنے کے لئے کوئی منصوبہ بندی تاحال سامنے نہیں آئی۔

بجٹ ردعمل

مزید : صفحہ اول