حکومت پاکستان نے ڈرون حملے نہ رکنے پر جاسوس طیارے مارگرانے کاعندیہ دیدیا

حکومت پاکستان نے ڈرون حملے نہ رکنے پر جاسوس طیارے مارگرانے کاعندیہ دیدیا
حکومت پاکستان نے ڈرون حملے نہ رکنے پر جاسوس طیارے مارگرانے کاعندیہ دیدیا

  



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)وزیراعظم کے مشیر برائے امور خارجہ سرتاج عزیز نے کہا ہے کہ پاکستان اور امریکہ کے درمیان ڈرون حملوں بارے اعلیٰ سطح کا اجلاس جلد ہونے والاہے ، آنے والے وقتوں میں ڈرون حملے روکنے میں کامیاب ہو جائیں گے،حملے بند نہ ہوئے تو تمام وسائل استعمال کرسکتے ہیں ۔تحریک انصاف کی رہ نما شیری مزاری نے ڈرون حملوں پر قومی اسمبلی میں توجہ دلاو نوٹس میں موقف اپنایاکہ ڈرون حملے ہو رہے ہیں، حکومت نے انہیں روکنے کے لیے کچھ نہیں کیاجس پر سرتاج عزیز نے کہا کہ وہ حملوں کی مذمت کرتے ہیں، یہ ملکی خود مختاری اور علاقائی امن کے خلاف ہیں، وزیراعظم نے واضح کر دیا ہے کہ ڈرون حملوں سے دونوں ممالک کے تعلقات پر اثر پڑتا ہے ، امریکہ کو آگاہ کر دیا ہے کہ پاکستان کو ڈرون حملوں پر شدید اعتراض ہے۔ شیری مزاری کا کہنا تھا کہ یہ وزارت خارجہ کا روایتی بیان پڑھ کر سنایا جا رہے ، اس پر اعتماد نہیں کرتے ، ڈرون حملے روکنے کے لیے باتوں کے سوا حقیقی طور پر کیا اقدامات کیے گئے۔ سرتاج عزیز نے ایوان کو بتایا کہ دونوں ممالک کے درمیان اعلیٰ سطح کا اجلاس جلد ہونے والاہے ، پاکستان اپنی حکمت عملی پیش کرے گا،حکومت پاکستان نے اجلاس میں بھرپور موقف پیش کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔سرتاج عزیز نے کہا کہ رواں سال اب تک 13 ڈرون حملے ہو چکے ہیں،بارہ حملے حملے انتخابات سے قبل ہوئے۔

مزید : اسلام آباد /اہم خبریں


loading...