پرویزمشرف کانام ای سی ایل سے نکالنے سے متعلق جلد سماعت کی حکومتی درخواست مسترد، وفاق کی اپیل کے درخواست کے لیے پانچ رکنی بینچ کی تشکیل

پرویزمشرف کانام ای سی ایل سے نکالنے سے متعلق جلد سماعت کی حکومتی درخواست ...
پرویزمشرف کانام ای سی ایل سے نکالنے سے متعلق جلد سماعت کی حکومتی درخواست مسترد، وفاق کی اپیل کے درخواست کے لیے پانچ رکنی بینچ کی تشکیل

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک ) سپریم کورٹ نے پرویز مشرف کا نام ای سی ایل سے نکالنے سے متعلق اپیل کی جلد سماعت کی حکومتی درخواست مسترد کردی جبکہ دوسری جانب چیف جسٹس پاکستان تصدق حسین جیلانی نے سابق صدر پرویز مشرف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کے خلاف حکومتی درخواست کی سماعت کے لیے پانچ رکنی بینچ تشکیل دے دیاہے ۔میڈیا رپورٹس کے مطابق وفاق کی جانب سے بھجوائی گئی درخواست کی سماعت چیف جسٹس پاکستان جسٹس تصدق حسین جیلانی نے کی ۔انہوں نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ عدالت عظمی کا تین رکنی بینچ اسی ہفتے کیس سننے کا کہہ چکا ہے جس کے بعد نئی درخواست دینا بے مقصد ہے، رواں ہفتے ہی جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں بینچ درخواست کی سماعت کرے گا۔واضح رہے کہ وفاقی حکومت نے پرویز مشرف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کے خلاف درخواسست کی جلد سماعت کرنے کی اپیل کی تھی جس پر فاضل بینچ نے سپریم کورٹ آفس کو اس کی سماعت رواں ہفتے ہی مقرر کرنے کا حکم دیا تھا، جس پر وفاقی حکومت نے درخواست کی مزید جلد سماعت کی درخواست چیف جسٹس کو بھجوائی تھی۔ادھر چیف جسٹس تصدق حسین جیلانی نے پرویز مشرف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کے خلاف حکومتی درخواست کی سماعت کے لیے جسٹس ناصر الملک کی سربراہی میں جسٹس جواد ایس خواجہ، جسٹس انور ظہیر جمالی، جسٹس اعجاز افضل اور جسٹس گلزار احمد پر مشتمل پانچ رکنی بینچ تشکیل دے دیا ہے جو 23 جون کو اس کیس کی سماعت کرے گا۔

مزید :

اسلام آباد -