یہ خبرپڑھ کر آپ کبھی بھی آم کے چھلکے پھینکیں گے نہیں بلکہ ۔۔۔۔

یہ خبرپڑھ کر آپ کبھی بھی آم کے چھلکے پھینکیں گے نہیں بلکہ ۔۔۔۔
یہ خبرپڑھ کر آپ کبھی بھی آم کے چھلکے پھینکیں گے نہیں بلکہ ۔۔۔۔

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک)کہاوت مشہور ہے کہ ”آم کے آم اور گٹھلیوں کے بھی دام،“ مگر آم کے متعلق نئی تحقیقات نے اس کہاوت کو بدل کر رکھ دیا ہے اور اب شاید یہ اس طرح ہونی چاہیے کہ ”آم کے آم اور چھلکوں کے بھی دام۔“پھلوں کے بادشاہ ”آم“ کے غذائی فوائد سے تو سبھی آگاہ ہیں لیکن شاید آپ کو معلوم نہ ہو کہ آم کا چھلکا بھی غذائی اعتبار سے بے شمار فوائد کا حامل ہے۔ محققین نے آم کے چھلکے کے فوائد جاننے کے لیے متعدد تحقیقات کی ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ آم کے چھلکے میں ایسے اجزاءپائے جاتے ہیں جو انسان کو کئی اقسام کے کینسر اور شوگر سے محفوظ رکھتے ہیں۔

آم کے چھلکے میں موجود اجزاءانسانی جسم کے خلیات میں موجودان مخصوص مالیکیولز کو منظم رکھتے ہیں جو خون میں کولیسٹرول کی مقدار کو کنٹرول کرتے ہیں، یہی مالیکیولز خون میں شوگر کی سطح کو بھی مستحکم رکھتے اور موٹاپے کے عوامل کو کم کرتے ہیں۔اب سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ آم کا چھلکا کیسے کھایا جائے؟ محققین کہتے ہیں کہ آپ چھلکے کوآم سے اتار کر بھی کھا سکتے ہیں اور آم کے گودے کے ساتھ بھی۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں ملک شیک یا دیگر ڈشوں میں آم استعمال کرتے ہوئے اس کا چھلکا نہیں اتارنا چاہیے۔ آپ جب کبھی آم کھائیں تو اس کا چھلکا بھی ساتھ کھانا چاہیے، اس سے آپ کا جسم مضبوط ہو گا اور آپ کئی طرح کی بیماریوں سے محفوظ رہیں گے۔

مزید :

تعلیم و صحت -