’میں اپنی والدہ کیساتھ رکشہ میں بیٹھی، تھوڑی دورگئے کہ اچانک ڈرائیور نے اپناہاتھ شلوار میں ڈال لیا اور ۔۔ ۔ “ پاکستانی لڑکی کیساتھ انتہائی شرمناک ترین واقعہ پیش آگیا

’میں اپنی والدہ کیساتھ رکشہ میں بیٹھی، تھوڑی دورگئے کہ اچانک ڈرائیور نے ...
’میں اپنی والدہ کیساتھ رکشہ میں بیٹھی، تھوڑی دورگئے کہ اچانک ڈرائیور نے اپناہاتھ شلوار میں ڈال لیا اور ۔۔ ۔ “ پاکستانی لڑکی کیساتھ انتہائی شرمناک ترین واقعہ پیش آگیا

  


کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان میں خواتین کو ہراساں کرنے کرواقعات عام ہورہے ہیںاورآئے روز ایسے واقعات رپورٹ بھی ہورہے ہیں جبکہ اب اس سے بھی اگلی سٹیج یہ آئی ہے کہ خواتین کو دیکھ کرچند مردحضرات خود لذتی میں مصروف دکھائی دینا شروع ہوگئے ،ایسے میں کئی خواتین خوفزدہ ہوجاتی ہیں لیکن کراچی یونیورسٹی کی ایک طالبہ شاہ تاج قادر نے رکشہ ڈرائیور کو خودلذتی میں مصروف دیکھ کر ایسا کام کردیا کہ آئندہ ایسا کرنے سے ہی توبہ کرلے گا۔

تفصیل کے مطابق شاہ تاج اور اس کی والدہ ایک رشتہ دار کے گھر سے واپس آرہی تھیں کہ آن لائن ٹیکسی سروس کی عدم دستیابی کی وجہ سے گھر تک جانے کے لیے رکشہ پکڑنے کا فیصلہ کیا۔ رات کے بارہ بج رہے تھے اورشاہ تاج نے محسوس کیا کہ ڈرائیور نے رکشہ آہستہ کردیاہے، وہ شیشے میں ان کے پستان دیکھ رہاتھا ، اسی دوران لڑکی نے دیکھا کہ رکشہ کا ہینڈل چھوڑ کر ڈرائیور نے اپنا ہاتھ شلوار میں ڈال لیا۔

  رکشہ ڈرائیور نے مبینہ طورپر خود لذتی شروع کردی تھی ، شاہ تاج نے اپنی والدہ کو بتایاکہ دراصل کیا ہورہاہے اور اس نے کسی تھانے کے آنے تک پرسکون رہنے کی ہدایت کردی تاکہ رکشہ بھی بند کرواسکیں، نیپا کے قریب پہنچیں تو رکشہ رکوایا اور فوری طورپر رکشے سے باہرآگئیں، شاہ تاج نے استفسا رکیا کہ وہ ممکنہ طورپر وہ ایسا کیسے کرسکتا ہے تاہم رکشہ ڈرائیور نے انکار کردیا اور کہاکہ ”باجی کیا ہوا؟ میں نے تو کچھ نہیں کیا“۔

رکشہ ڈرائیور کا ناقابل یقین رویہ اور سراسرجھوٹ سن کر شاہ تاج کا صبر جواب دے گیا اور اس نے ڈرائیور کا گریبان پکڑا اور اس کے منہ اور چھاتی پر تھپڑمارنے شروع کردیئے اور جب دوبارہ رکشہ میں بیٹھنے لگی تو پھر پیٹا، وہ اس سے مار کھاتا ہوا رکشہ چلا کر اندھیرے میں غائب ہوگیا۔

رپورٹ کے مطابق جب یہ سب کچھ شروع ہوا تو اس کے ذہن میں کیا خیال آیا؟ توشاہ تاج نے بتایاکہ یہ خوفناک تھا لیکن آج کل روزانہ ہی ایسے واقعات کا سامنا کرنا پڑتاہے ، میں نے ایک چاقو اور مرچوں والا سپرے اپنے ساتھ رکھنا شروع کردیا ، جب میں 12سال کی تھی تو ایسے واقعات واقعی دلخراش محسوس ہوتے تھے تاہم اب میں ڈرنے کی بجائے پرسکون رہ کر کچھ حل نکالنے کا سوچتی ہوں۔

صرف یہی نہیں بلکہ انہوں نے لڑکیوں کو ایسی صورتحال سے نمٹنے کے لیے ٹپس بھی دیں اور کہاکہ اگرآپ اپنے اردگرد کسی کو خودلذتی میں مصروف دیکھیں تو گھبرائیں نہیں، مجھے پتہ ہے کہ یہ بری بات ہے لیکن آپ اپنا اعتماد برقراررکھیں اور پرسکون رہیں۔

اس شخص کی ویڈیو یا تصویر بنانے کی کوشش کریں، اگر ممکن ہوتو نمبر پلیٹ نوٹ کریں۔

اسے آرام سے کسی مصروف علاقے میں گاڑی روکنے کو کہیں، اگرکوئی تھانہ قریب ہوتواسے ترجیح دیں۔

اب وہ آپ کے قابو میں ہے ، اس کی پٹائی کریں ، ٹھڈے ماریں اور اپنے اردگرد ہجوم کو اکٹھا کرنے کی کوشش کریںلیکن اسے آرام سے جانے نہ دیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /علاقائی /سندھ /کراچی


loading...