اور اب عمران خان نے ایسی بات کہہ دی کہ پاکستانی خواتین غصے سے آگ بگولہ ہو گئیں ،احتجاج کرنے لگیں کیونکہ ۔۔۔

اور اب عمران خان نے ایسی بات کہہ دی کہ پاکستانی خواتین غصے سے آگ بگولہ ہو گئیں ...
اور اب عمران خان نے ایسی بات کہہ دی کہ پاکستانی خواتین غصے سے آگ بگولہ ہو گئیں ،احتجاج کرنے لگیں کیونکہ ۔۔۔

  


اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )تحریک انصاف کے چیئر مین عمران خان نے مشرق کی حقوق نسواں تحریک سے اختلاف کیا توسوشل میڈ یا پر ہنگامہ برپا ہو گیا ،کپتان کو شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑ گیا ۔نجی نیوز چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے عمران خان نے کہا تھا کہ ماں کا بچے پر بہت اثر ہوتا ہے ،بچے ماں کی زبان سیکھتے ہیں اور اس سے تربیت حاصل کرتے ہیں ،میں مشرق حقوق نسواں تحریک سے اختلاف کرتا ہوں کیونکہ اس نے ماں کے کردار گرا دیا ۔عمران خان کا کہنا تھا کہ میں جب بڑا ہو رہا تھا تو میری ماں کا میرے پر بڑا اثر تھا ۔

عمران خان کی جانب سے یہ بیان خواتین کے خلاف تصور کیا گیا اور سوشل میڈ یا پر ان کے خلاف خوب تنقید ہوئی ،سوشل میڈ یا صارفین نے اس بیان کو غیر ذمہ دارانہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس بیان سے عمران خان کی حقوق نسواں تحریک کے بارے میں کم علمی ظاہر ہوتی ہے ۔

ایمن بچہ نامی خاتون نے کہا کہ حقوق نسواں تحریک کا پرچار کرنے والوں نے ماں کے کرداری کو کبھی تنزلی کا شکار نہیں ہونے دیا بلکہ وہ ماں کے حقوق کے بارے میں بات کرتے ہیں ۔

عامر راشد نے کہا کہ حقو ق نسواں تحریک چلانے والے لوگ ماﺅں کا اس حد تک خیال رکھتے ہیں کہ وہ اپنے بچوں کی بہتر دیکھ بحال کر سکیں ۔

سیرفینا نامی لڑکی نے کہا کہ حقوق نسواں کے لیے آواز اٹھانے والوں نے ما ں کا درجہ کبھی کم نہیں ہونے دیا بلکہ ماﺅں کی حفاظت کے لیے قانون سازی میں کردار ادا کیا ۔

آمنہ خان نے کہا کہ اگر عمران خان سوچتے ہیں کہ ماں کے روپ میں عورت کا کردار معاشرے میں بہت درجہ رکھتا ہے تو تحریک انصاف کو ماﺅں کی زندگیاں بہتر کے لیے 2016میں گھریلوں تشدد کے خلاف پرو ٹیکشن بل کی مخالفت نہیں کرنی چاہتے تھی ۔

مزید : قومی


loading...