زکریا یونیورسٹی ‘ پی ایس ایف  کارکنوں کا کینٹین مالکان پر تشدد

زکریا یونیورسٹی ‘ پی ایس ایف  کارکنوں کا کینٹین مالکان پر تشدد

  

ملتان(وقائع نگار‘سٹاف رپورٹر) بہاالدین زکریا یونیورسٹی میں پی ایس ایف کا کنٹین والے پر پھر تشدد ۔تفصیل کے مطابق گیلانی لاءکالج کے نزدیک پی ایس ایف سے تعلق رکھنے والے طلبا (بقیہ نمبر22صفحہ12پر )

اور فوٹو اسٹیٹ کی د کان پر کام کرنے والے ملازمین میں پھر جھگڑا ہوگیا ، گزشتہ روز غلام حسین اور الطاف حسین سے فیصل ڈحلوں، نوید غضنفر نے دکان بند کرنے کا کہا۔ انکار پر15 طلبا کو بلا یاجنہوں نے مل کر دونوں کو تشدد کا نشانہ بنایا جس سے غلام حسین کا سر پھٹ گیا ۔اطلاع ملنے پر یونیورسٹی کی سکیورٹی اور تھانہ الپہ کی پولیس موقع پرپہنچ گئی جبکہ طلبا موقع سے فرار ہوگئے۔ زخمی جب نشترہسپتال جانے لگا تواس کو مرکزی گیٹ پر روک لیا گیا اور ڈیڑھ گھنٹے تک بٹھائے رکھا گیا، انہوں نے الزام لگایا کہ انتظامیہ پی ایس ایف کی سرپرستی کررہی ہے جس کی وجہ سے وہ آئے روز کنٹین مالکان کو تشدد کا نشانہ بنارہے ہیں۔ آج تک کسی کے خلاف کارروائی نہیں کی گئی۔ بعد ازں زخمی کو نشترہسپتال جانے کی اجازت دے دی گئی۔ دوسری طرف پولیس اور یونیورسٹی انتظامیہ نے کاروائی کا آغاز کر دیا گیا ہے یاد رہے کہ چند روز قبل بھی طلبا تنظیم کے کارکنوں کی جانب سے ایگری کلچر ڈیپارٹمنٹ میں فوٹو اسٹیٹ کی دوکان پر کام کرنے والے ملازم طارق کو بڑی طرح سے تشدد کا نشانہ بنایا گیا تھا جن کے خلاف انتظامیہ نے تاحال کوئی کارروائی نہیںکی۔

تشدد

مزید :

ملتان صفحہ آخر -