بیرون ملک سے کروڑوں کی ٹی ٹی رقوم سلمان شہباز کے اکاؤنٹس میں منتقل کی گئیں،مشتاق چینی

  بیرون ملک سے کروڑوں کی ٹی ٹی رقوم سلمان شہباز کے اکاؤنٹس میں منتقل کی ...

  

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک/ این این آئی) شہباز شریف خاندان کے خلاف وعدہ معاف گواہ نے جوڈیشل مجسٹریٹ کے سامنے 164 کا بیان قلمبند کرادیا۔قومی احتساب بیورو کی ٹیم شہباز شریف فیملی کے خلاف بننے والے وعدہ معاف گواہ مشتاق چینی اور اس کے بیٹے یاسر کو لے کر جوڈیشل مجسٹریٹ عامر رضا بیٹو کی عدالت میں پہنچی،جہاں بند کمرے میں ان کا بیان ریکارڈ کیا گیا۔نجی ٹی وی نے وعدہ معاف گواہان کے بیان کی کاپی حاصل کرلی جس کے مطابق مشتاق چینی نے عدالت کو بتایا کہ 1998 سے رمضان شوگر ملز کا ہول سیل ڈیلر ہوں اور ہمارا رمضان شوگر ملز سے کاروباری تعلق ہے۔  2005 سے حمزہ شہباز(بقیہ نمبر10صفحہ12پر)

 اور سلمان شہباز کے ساتھ کاروبار کررہے ہیں، شہباز شریف فیملی کے چیف فنانشل افسر عثمان نے 60 کروڑ روپے کی بلیک منی وائٹ کرنے کی بات کی۔گواہ نے عدالت کو بتایا کہ 2014 میں 21 کروڑ 40 لاکھ کی ٹی ٹی بیرون ملک سے منگوائی، دوسری ٹی ٹی 29 کروڑ روپے کی منگوائی گئی اور یہ ظاہر کرنے کی کوشش کی گئی کہ رقم باہر سے منگوائی گئی ہے اور جن ناموں اور کمپنیوں کوٹی ٹی لگوائی گئی ان کو نہیں جانتا۔گواہ مشتاق چینی کے مطابق سلمان شہباز اور میرے درمیان قرض کا فرضی معاہدہ کیا گیا جب کہ ٹی ٹی کی رقوم سلمان شہباز کے اکاؤنٹس میں ٹرانسفر کیں۔گواہ نے اعتراف کیا کہ ہم کاروبار اور پیسہ وائٹ ہونے کے لالچ میں کام کرتے رہے۔یاد رہے کہ قومی احتساب بیورو کی جانب سے رمضان شوگر ملز کیس کی تحقیقات کی جارہی ہے جس میں حمزہ شہباز کو گرفتار کیا جاچکا ہے جب کہ شہباز شریف سے بھی نیب پوچھ گچھ کرچکی ہے۔دریں اثناء احتساب عدالت نے شہباز شریف فیملی کے مبینہ فرنٹ مین مشتاق چینی کو 14روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا۔ احتساب عدالت کے جج جواد الحسن نے کیس پر سماعت کی۔دوران سماعت نیب پراسیکیوٹر کی جانب سے موقف اپنایا گیا کہ مشتاق چینی کے مزید جسمانی ریمانڈ کی ضرورت نہیں اگر مشتاق چینی جوڈیشل کر دیا جائے تو ہمیں کوئی اعتراض نہیں۔عدالت نے نیب کے بیان پر مشتاق چینی کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل منتقل کرنے کا حکم دے دیا۔

مشتاق چینی بیان

مزید :

ملتان صفحہ آخر -