مشرف نے بردہ فروشی کرکے امریکہ سے لاکھوں ڈالرز لیے وہ کہاں؟ پروفیسر ساجد میر

مشرف نے بردہ فروشی کرکے امریکہ سے لاکھوں ڈالرز لیے وہ کہاں؟ پروفیسر ساجد میر

  

لاہور (خصوصی رپورٹ) مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان کے سربراہ سینیٹر پروفیسر ساجد میر نے کہا ہے کہ سلیکٹڈ وزیر اعظم سلیکٹڈ احتساب کررہا ہے۔سیاستدانوں‘ بیورو کریٹس‘ ججوں‘ جرنیلوں سب کابلا امتیاز احتساب ہونا چاہئے۔ چاروں خلفائے راشدین نے اپنے ا?پ کو کڑے احتساب کیلئے ہمیشہ پیش کیا۔ مرکزاہل حدیث راوی روڈ میں عید ملن تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ بدقسمتی یہ ہے کہ پاکستان میں ہر حکومت احتساب کی بات کرتی ہے لیکن وہ اپنے مخالفین کا احتساب چاہتی ہے‘ لیکن اپنے ا?پ کو احتساب سے ماورا سمجھتی ہے اس بات پر کسی کو اعتراض نہیں کہ پاکستان میں ایک ایسے احتسابی نظام کی ضرورت ہے جو سب کو احتساب کے کٹہرے میں کھڑا کرے۔ احتساب کی ماضی میں جو بھی کوششیں ہوئیں ان میں بھی انصاف کے تقاضے پورے نہیں کئے گئے۔ ان ادوار میں احتساب انتقام کی شکل اختیار کرتا رہا۔قرضوں پر کمیشن ضرور بنایا جائے مگر صرف زرداری اور نواز شریف کے ادوار ہی کیوں؟ پرویز مشرف نے بردہ فروشی کرکے امریکہ سے لاکھوں ڈالرز لیے وہ کہاں ہیں؟ اس کے دور کا بھی احتساب ہونا چاہیے۔پرویز مشرف نے اپنی کتاب میں خود لکھا کہ وہ ڈالر لے کر پاکستانیوں کے امریکہ کے حوالے کرتا رہا۔اور پھرخود عمران خاں کی حکومت نے دس ماہ میں جو قرضے لیے ہیں اسکا جواب کون دے گا؟ پروفیسر ساجد میر نے کہا کہ جب ملک کے حاکم سے لے کر عام رعایا تک سب قابلِ احتساب ہیں تو کیوں کچھ لوگ، کچھ طبقات کچھ ادارے احتساب سے بالاتر کیوں ہیں۔ پاکستان میں اب تک نیب جس طرح کی کارروائیوں میں ملوث رہا ہے ان کا احتساب کون کرے گا۔

پروفیسر ساجد میر

مزید :

صفحہ آخر -