لاہور ہائیکورٹ: دریائے سندھ کی ریت سے سونا نکا لنے والی چینی کمپنی کو مشینری اٹھانے کی اجازت

لاہور ہائیکورٹ: دریائے سندھ کی ریت سے سونا نکا لنے والی چینی کمپنی کو مشینری ...

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)چیف جسٹس لاہور ہاء کورٹ مسٹر جسٹس سردارمحمدشمیم خان نے دریائے سندھ سے ریت کی آڑ میں چینی کمپنی کی طرف سے سونا نکالنے کے خلاف کیس میں چینی کمپنی کو مشینری اٹھانے کی اجازت دے دی تاہم ریت نکالنے کے خلاف اپنے عبوری حکم امتناعی میں 26جون تک توسیع کردی، چینی کمپنی کو ریت نکالنے کا ٹھیکہ دینے کے خلاف مقامی زمینداروں نے درخواست دائرکررکھی ہے جس میں کہا گیاہے کہ چینی کمپنی ہیے ہانگ سپر کو سی پیک کے تحت بننے والی موٹر وے برہان تا حویلیاں کی تعمیر کے لئے دریائے سندھ سے ریت نکالنے کا ٹھیکہ دیا گیا، ریت میں سونے کی آمیزش ہے،یہ کمپنی روزانہ 5کلو تک سونا نکال کر چین منتقل کرتی رہی،فاضل جج نے اس کیس میں حکم امتناعی جاری کررکھاہے،گزشتہ روز چینی کمپنی کی اس کیس میں متفرق درخواست منظور کرتے ہوئے عدالت نے کمپنی کو اپنی مشینری اٹھانے کی اجازت دے دی تاہم کمپنی کو اس سے قبل بینک گارنٹی جمع کراناہوگی۔سیکرٹری معدنیات کی طرف سے عدالت کو بتایا گیا کہ ریت کے تجزئیے کے لئے اعلیٰ سطحی کمیٹی بنادی گئی ہے،کمیٹی کی رپورٹ کے بعد سونے کی مقدار کا تعین ہوگا، چینی کمپنی کا متفرق درخواست میں موقف تھا کہ مشینری کی دوسری جگہ کام کے لئے ضرورت ہے، دریائے سندھ میں آنے والے دنوں میں سیلاب آنے کا بھی خدشہ ہے، موقع پر موجود قیمتی مشینری اٹھانے کی اجازت دی جائے،اس کیس کی مزید سماعت 26جون کو ہوگی۔

مزید :

علاقائی -