احتساب عدالت: سراج درانی کیخلاف نیت ریفرنس قابل سماعت ہونے پر فیصلہ یکم جولائی تک محفوظ

احتساب عدالت: سراج درانی کیخلاف نیت ریفرنس قابل سماعت ہونے پر فیصلہ یکم ...

  

کراچی(این این آئی)کراچی کی احتساب عدالت نے اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی و دیگر کے خلاف آمدن سے زائد اثاثے بنانے کا ریفرنس قابل سماعت ہونے سے متعلق فیصلہ محفوظ کر تے ہوئے سماعت یکم جولائی تک ملتوی کردی۔آمدن سے زائد اثاثے بنانے کے الزام میں گرفتار سپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی و دیگر ملزمان احتساب عدالت میں پیش ہوئے۔ملزم آغا سراج درانی کے وکیل راحیل نیازی ایڈووکیٹ نے موقف اختیار کیا کہ قومی احتساب بیورو (نیب)کی جانب سے دائر ریفرنس میں قانونی تقاضے پورے نہیں کیے گئے۔انہوں نے کہا کہ نیب نے آغا سراج درانی کو جس تاریخ کو پیش ہونے کا نوٹس دیا اس سے قبل ہی انہیں گرفتار کر لیا تھا۔راحیل نیازی ایڈووکیٹ نے کہا کہ ملزم کے خلاف کوئی ٹھوس شواہد نہیں ہیں اورنہ ہی ایک روپے کی کرپشن کا الزام ہے۔نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ موصول ہوئی شکایت کی تصدیق اور چیئر مین نیب کی اجازت کے بعد انکوائری شروع کردی گئی ہے، مکمل تحقیقات کے بعد چیئر مین نیب نے ریفرنس دائر کرنے کی منظوری دی ہے۔بعدازاں عدالت نے ریفرنس قابل سماعت ہونے یا نہ ہونے سے متعلق فیصلہ محفوط کرتے ہوئے سماعت یکم جولائی تک ملتوی کر دی۔ قبل ازیں احتساب عدالت میں میڈیا سے غیررسمی گفتگو کرتے ہوئے سپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی نے کہاکہ آصف زرداری اور فریال تالپور کے خلاف جب ریفرنس آئے گا تب صورت حال واضح ہوگی۔اسمبلی کو سب جیل قرار دینے پر اپوزیشن کا احتجاج روایتی ہے، اپوزیشن ہمیشہ ہی احتجاج کرتی ہے، کیونکہ وہ قانون سے لاعلم ہے۔

سراج درانی/فیصلہ محفوظ

مزید :

علاقائی -