حکومت دھاندلی سے بجٹ منظور کرانے کی کوشش کررہی ہے،بجٹ کو منظوری سے روکنے کے لئے اپوزیشن مشترکہ کمیٹی بنائے گی:بلاول بھٹو زرداری

حکومت دھاندلی سے بجٹ منظور کرانے کی کوشش کررہی ہے،بجٹ کو منظوری سے روکنے کے ...
حکومت دھاندلی سے بجٹ منظور کرانے کی کوشش کررہی ہے،بجٹ کو منظوری سے روکنے کے لئے اپوزیشن مشترکہ کمیٹی بنائے گی:بلاول بھٹو زرداری

  


اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان پیپلز پارٹی کے کو چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ دھاندلی زدہ حکومت دھاندلی سے بجٹ منظور کرانے کی کوشش کررہی ہے،بجٹ کو منظوری سے روکنے کے لئے اپوزیشن کمیٹی بنائے گی،سپیکر کو گرفتار اراکین اسمبلی کے پراڈکشن آرڈرز کے اجراء کے لئے لکھے گئے دوسرے خط میں حکومتی اتحادیوں کے بھی دستخط ہیں،آئی ایم ایف کا تیار کردہ بجٹ اس ملک کے لئے معاشی خودکشی ہے۔

تفصیلات کے مطابق بلاول بھٹوزرداری نے وفد کے ہمراہ پاکستان مسلم لیگ ن کے صدر اور قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر میاں شہباز شریف سے ان کے چیمبر میں تفصیلی ملاقات  کی ،دونوں جماعتوں کے رہنماؤں نے ملکی  سیاسی صورتحال اور اے پی سی سے متعلق امور پربات چیت کی۔اس موقع پر  پیپلز پارٹی کی جانب سے  راجہ پرویزاشرف، خورشید شاہ، نویدقمر، شیری رحمان اور مصطفی نواز کھوکھر اور مسلم لیگ ن کے رانا تنویر، مرتضی عباسی، مریم اورنگزیب، شہزہ فاطمہ، احسن اقبال اور میاں جاوید لطیف بھی ملاقات میں شامل تھے۔

اپوزیشن لیڈر شہباز شریف سے ملاقات کے بعد  میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ حکومت اپوزیشن لیڈر کو تقریر کرنے تک کا موقع نہیں دے رہی،حکومت دھاندلی کے ذریعے قومی اسمبلی سے بجٹ منظور کرانے کی کوشش کررہی ہے، بجٹ کو منظوری سے روکنے کے لئے اپوزیشن مشترکہ کمیٹی بنائے گی،اپوزیشن اسمبلی میں حکومت کی اس دھاندلی کا مقابلہ کررہی ہے،شہبازشریف بھی کہہ چکے ہیں کہ تمام اپوزیشن کو مل کر اس عوام دشمن بجٹ کو منظوری سے روکنا پڑے گا۔انہوں نے کہا کہ سابق صدر زرداری، محسن داوڑ، علی وزیر اور سعد رفیق کے پراڈکشن آرڈر جاری نہیں کئے جارہے،گرفتار اراکین قومی اسمبلی کے پراڈکشن آرڈرز اس لئے جاری نہیں کئے جارہے تاکہ وہ بجٹ کی بحث میں حصہ نہ لے سکیں۔بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہصدر آصف زرداری کے پراڈکشن آرڈر کے لئے آج ہم نے سپیکر کو ایک اور خط لکھا ہے، سپیکر کو گرفتار اراکین اسمبلی کے پراڈکشن آرڈرز کے اجراء کے لئے لکھے گئے دوسرے خط میں حکومتی اتحادیوں کے بھی دستخط ہیں،آج ایم کیوایم سمیت دیگر حکومتی اتحادیوں نے پراڈکشن آرڈرز کے معاملے پر اپوزیشن کا ساتھ دیا، مونس الہی نے آکر بتایا کہ پراڈکشن آرڈر کے حوالے سے مسلم لیگ ق بھی اپوزیشن کے ساتھ ہے،یہ ہمارا پارلیمانی حق ہے کہ نواب شاہ، لاہور، جنوبی و شمالی وزیرستان کے عوام کی بجٹ سیشن میں نمائندگی ہو،

 سپیکر قومی اسمبلی سے آج جو معاملات طے ہوئے، اس سے بہتری کی امید ہے، آئی ایم ایف کا تیار کردہ بجٹ اس ملک کے لئے معاشی خودکشی ہے،پاکستان پیپلزپارٹی، پاکستان مسلم لیگ ن اور اپوزیشن میں ہمارے اتحادی بجٹ کو منظوری سے روکنے کے لئے کمیٹی بنارہے ہیں، غریبوں، کسانوں اور مزدوروں کو اس بجٹ سے بچانے کے لئے اپوزیشن متحرک ہے،جلد آل پارٹیز کانفرنس ہوگی جہاں تمام اپوزیشن پارٹیاں مل کر اپنا لائحہ عمل طے کریں گی۔

بلاول بھٹوزرداری سے ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شہبازشریف نے کہا کہ پارلیمنٹ میں صورتحال بہتر بنانے کی کوشش کریں گے جوکچھ ہوا نہیں ہونا چاہئے تھا ۔ انہوں نے کہا کہ بلاول سے ملاقات میں سیاسی صورتحال اور اے پی سی سے متعلق امورپر بات چیت ہوئی ہے ، بجٹ عوام دشمن ہے ،اہم حقائق کے ساتھ بجٹ پر بحث کریں گے ۔

مزید : قومی /اہم خبریں