علامّہ اقبال اسلامی اتحا دکے نقیب تھے، عالمی سیمینا رسے ذوالفقار چیمہ کاخطاب

علامّہ اقبال اسلامی اتحا دکے نقیب تھے، عالمی سیمینا رسے ذوالفقار چیمہ ...
علامّہ اقبال اسلامی اتحا دکے نقیب تھے، عالمی سیمینا رسے ذوالفقار چیمہ کاخطاب

  


تہران(ڈیلی پاکستان آن لائن ) علامّہ اقبال کونسل اسلام آباد کے چیئر مین ذوالفقاراحمد چیمہ نے کہاکہ علا مّہ اقبال مسلمانوں کے درمیان،رنگ، نسل،فرقے اور علاقے کے اختلافات سے متنفرتھے اور وہ مسلمانوں کے درمیان مکمل اتحاداور ہم آہنگی کے داعی تھے۔

ذوالفقار احمد چیمہ تہران میں دس اسلامی ملکوں کی تنظیم ای۔سی۔او کے کلچرل انسٹیٹیوٹ کے تحت علامہ اقبال کے فلسفے پر منعقد ہونے والے عالمی سیمینار سے خطاب کر رہے تھے۔انہوں نے کہا کہ اقبال نے خودشناسی،خوداعتمادی اورخوداری کو خودی سے تعبیر کیا ہے۔انہوں نے کہاکہ اقبال نے امت اسلامیہ کو لاحق جن بیماریوں کی نشاندہی کی تھی، آج بھی وہ انہی بیماریوں میں مبتلا ہے۔آج بھی مسلمان پسماندگی، احساس کمتری، علم اورتحقیق سے دوری اور باہمی جھگڑوں کا شکار ہیں۔اقبال نے مسلمانوں کو ذہنی پسماندگی اور احساس کمتری کی دلد ل سے نکالا تھا۔

وہ اس بات کے خواہشمند تھے کہ مسلم نوجوان حصولِ علم اور سائنسی تحقیق پر توجہ دیں تاکہ وہ پوری کائنات کو مسخر کر سکیں۔ذوالفقار چیمہ نے اقبال کے اردواور فارسی کے اشعارسناکر بتایاکہ اقبال نے مغربی تہذیب کی قباحتوں کو دلائل کے ساتھ بے نقاب کیا، مسلمانوں کو علم اور تحقیق کی جانب راغب ہونے کی تلقین کی اور وہ تمام مسلمانوں کو متحد ہونے کا درس دیتے رہے اور ساتھ ساتھ تنبیہہ بھی کرتے رہے کہ اگرمسلمان متحد نہ ہوئے تو وہ خاکِ رہگزر کی طرح مِٹ جائیں گے۔سیمینار میں ای۔سی۔آئی کے صدر ڈاکٹر مہدی مظاہری، پاکستانی سفیر میڈم رفعت مسعود کے علاوہ کئی ممالک کے سفیروں، صاحبانِ علم و دانش اور ماہر ین ِ تعلیم نے شرکت کی۔

مزید : قومی