ٹریول، عمرہ ٹریڈ، حج ٹورز آپریٹرز کا بلا سود قرضوں کی سہولت اور ریلیف پیکیج کا مطالبہ

      ٹریول، عمرہ ٹریڈ، حج ٹورز آپریٹرز کا بلا سود قرضوں کی سہولت اور ریلیف ...

  

لاہور(رپورٹ میاں اشفاق انجم، تصاویر، ایوب بشیر) کورونا لاک ڈاؤن کی وجہ سے 25 فروری سے ٹریول، ٹورازم اور عمرہ ٹریڈ بند ہے سینکڑوں دفاتر سے وابستہ ہزاروں کارکن بے روزگار ہو رہے ہیں حج منسوخی کے حوالے سے خدشات نے بحران مزید بڑھا دیا ہے۔ٹریول ٹورازم عمرہ اور حج ٹریڈ سے وابستہ رہنماؤں نے مشترکہ طور پر کہا ہے کہ ٹریول اور عمرہ ٹریڈ کے ساتھ ساتھ حج ٹورز آپریٹرز سب سے زیادہ ٹیکس دینے والا شعبہ ہے جوحکومت کی عدم دلچسپی کی وجہ سے دیوالیہ پن کا شکار ہے۔وزیر اعظم نوٹس لیں،بلاسود قرضوں کی سہولت اور ریلیف پیکیج کا اعلان کریں۔وفاقی سطح پر وصول کیا جانے والا پی آر اے ٹیکس۔ٹورازم فیس، پروفیشنل ٹیکس، انکم ٹیکس اور ایاٹا لائسنس کی فیس کو ایک سال کیلئے معاف کیا جائے اور یوٹیلٹی بلز میں ریلیف دیا جائے۔ایاٹا گارنٹی کی مدت بھی ایک سال بڑھائی جائے۔80 فیصد دفاتر کرائے کے ہیں جو 4 ماہ سے بند ہیں کرایہ میں بھی ریلیف دیا جائے۔ان خیالات کا اظہارحاجی شاہد رفیق، ذعیم صدیقی، حاجی مقبول احمد، ثناء اللہ خان، وحید اقبال بٹ، جمال خان، ندیم اقبال، جاوید اختر، قاضی جمیل، کامران زیب، حافظ شفیق کاشف، جبار انجم، احسان اللہ، خرم ثقلین، علیم جاوید چوہدری، جاوید اختر، حاجی عنایت، کامران زیب، پروفیسر زاہد فاروق کھوکھر، خواجہ سہیل، عابد شیخ، زاہد جنجوعہ اور رانا شاہد نذیر نے روزنامہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

ٹور آپریٹرز

مزید :

صفحہ آخر -