کرونا کیسوں میں اضافہ، دو ہفتوں کیلئے مکمل لا ک ڈاؤن ورنہ شہریوں کا اللہ حافظ، ڈاکٹر زکی انتظامیہ کو وارننگ

  کرونا کیسوں میں اضافہ، دو ہفتوں کیلئے مکمل لا ک ڈاؤن ورنہ شہریوں کا اللہ ...

  

ملتان(نمائندہ خصوصی)پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن ملتان کے صدر پروفیسر ڈاکٹر مسعود الروف ہراج کا کہنا ہے کہ موثر اور بروقت لاک ڈاون نہ کرنے کی وجہ سے ملتان میں کورونا کیسز میں اضافہ ہوا,نشتر میں داخل پچاس فیصد کورونا مریضوں کی حالت تشویشناک ہے،دو ہفتوں کا مکمل لاک ڈاون نہ کیا گیا تو پورا نشتر ہسپتال صرف کورونا ہسپتال بن کر رہ جائیگا,نشتر ہسپتال میں کورونا کے مریض ایڑیاں رگڑ رگڑ کر مر(بقیہ نمبر4صفحہ6پر)

رہے ہیں،تفصیل کے مطابق پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن ملتان کے عہدیداران پروفیسر مسعود ہراج،ڈاکٹر رانا خاور،پروفیسر عباس نقوی،ڈاکٹر طارق وقار،ڈاکٹر مرتضے بلوچ،ڈاکٹر ڈوالقرنین حیدر،ڈاکٹر قادر خان،ڈاکٹر کامران صدیقی اور دیگر نے گزشتہ روز ملتان پریس کلب میں مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ پی ایم اے ملتان نے بارہا میڈیا کے ذریعے ضلعی اور صوبائی حکومت کو مو ثر لاک ڈا?ن کرنے کا مطالبہ کیا لیکن انتظامیہ لاک ڈا?ن اور ایس او پیز پر عمل درآمد کرانے میں ناکام رہی جس کی وجہ سے ملتان میں کرونا کیسز میں شدید اضافہ ہوچکا ہے اس وقت نشتر ہسپتال ملتان کے سات وارڈز میں 150کورونا مریض موجود ہیں جن میں 50فیصد سیریس اور آکسیجن پر ہیں انہوں نے کہا کہ روزانہ کی بنیاد پر نشتر ایمرجنسی میں 20سے،30سیریس مریض داخل ہورہے ہیں جن کو کورونا کا شبہ ہے ہم صوبائی حکومت اور ضلعی انتظامیہ سے پرزور مطالبہ کرتے ہیں کہ کم از کم دو ہفتوں کے لیے مکمل اور موثر لاک ڈا?ن لگایا جائے نشتر ہسپتال میں ڈاکٹرز اور سٹاف کے علاوہ پیتھالوجی ڈیپارٹمنٹ میں عملے کی شدید کمی ہے جسے فوری پورا کیا جائے انہوں نے کہا کہ مریضوں کی بڑھتی تعداد کے لیے صوبائی اور ضلعی حکومتیں کسی قسم کا تعاون نہیں کررہیں اور نشتر انتظامیہ مشاورت کے بغیر ہی آہستہ آہستہ تمام وارڈز کو کرونا وارڈز میں تبدیل کررہی ہے انہوں نے بتایا کہ حالیہ نوٹس کے مطابق orthoکے دواور کارڈیالوجی کا ایک وارڈ کورونا وارڈ میں تبدیل کیا جارہا ہے نشتر کے orthoوارڈ میں پچھلے آٹھ مہینوں میں تقریبا دوہزار مریض داخل کئے گئے ہر مہینے 150سے200مریضوں کے آپریشن کئے گئے اور کورونا دنوں میں بھی 60سے70آپریشن کئے گئے جبکہ کارڈیالوجی وارڈ میں بھی 20سے30مریضوں کی روزانہ ECHOاور 100مریضوں کی ECGاور ایمرجنسی سے روزانہ 20مریضوں کو وارڈ میں داخل کیا جاتا ہے اگر یہی حالات رہے تو تو نشتر ہسپتال کے تمام وارڈ بند ہوکر کورونا وارڈ میں تبدیل ہوجائیں گے انہوں نے وزیر اعلی پنجاب،وزیر صحت پنجاب،سیکرٹری صحت پنجاب،کمشنر ملتان اور نشتر انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ ایمرجنسی حالات میں ملتان میں موجود ڈسٹرکٹ ہسپتال جو 260بیڈز پر مشتمل ہے اسے کورونا میں تبدیل کیا جائے کیونکہ نشتر میں اب تک سات شعبے بند ہوچکے ہیں اگر اسی طرح وارڈز بند ہوتے رہے تو نشتر کورونا ہسپتال میں تبدیل ہوجائے گا.

ڈاکٹرمسعود

مزید :

ملتان صفحہ آخر -