اسلام کے نام پر بننے والا ملک ہمیشہ کیلئے قائم رہے گا،پروفیسر پروین خان

اسلام کے نام پر بننے والا ملک ہمیشہ کیلئے قائم رہے گا،پروفیسر پروین خان

  

لاہور (لیڈی رپورٹر) نظریاتی سمرسکول ملک بھر میں اپنی نوعیت کا منفرد اور واحدسکول ہے جو نظریات کی بنیاد پرچلایا جا رہا ہے۔ اسلام کے نام پر قائم ہونیوالی یہ ریاست تاقیامت قائم ودائم رہے گی۔ہمیں آزادی کی قدر اور اس کی حفاظت کیلئے ہمہ وقت تیار رہنا چاہئے۔ نظریاتی سمر سکول میں نسلِ نو کی تعلیم و تربیت کا اس انداز میں اہتمام کیا جائے گا کہ وہ اپنی شاندار تاریخ‘ اعلیٰ اسلامی اقدار اور وطن عزیز کی نظریاتی بنیادوں سے بخوبی آگاہ ہو جائیں۔ ان خیالات کااظہار ماہر تعلیم پروفیسر ڈاکٹر پروین خان نے نظریہئ پاکستان ٹرسٹ کے زیر اہتمام جاری اپنی نوعیت کے منفرد پروگرام نظریاتی سمر سکول کے 20 ویں سالانہ آن لائن تعلیمی سیشن کے دوسرے روز اپنے خطاب کے دوران کیا۔ اس سکول کا ماٹو ”پاکستان سے پیار کرو“ ہے۔ پروفیسر ڈاکٹر پروین خان نے کہا کہ پاکستان ایک نظریہ کی بنیاد پر قائم ہوا۔ ہندو اور مسلمان الگ قوم ہیں اسے دوقومی نظریہ کہتے ہیں۔

اور اسی کی بنیاد پر پاکستان معرض وجود میں آیا۔ ہم نئی نسلوں کو دوقومی نظریہ، تحریک پاکستان، قیام پاکستان کے اسباب ومقاصد اور وطن عزیز کی خاطر دی جانیوالی قربانیوں سے آگاہ کر رہے ہیں۔مشاہیر تحریک پاکستان اعلیٰ کردار کے حامل تھے اور ہم بچوں میں مشاہیر تحریک آزادی والی اعلیٰ صفات پیدا کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ آپ جھوٹ نہ بولیں اور ہمیشہ امانتداری کو اپنا شعار بنائیں۔ اسلامی اقداروروایات کو اپنا کر پاکستان کے قابل فخر شہری بنیں۔ نظریاتی سمر سکول کے ذریعے ہم نے بچوں میں علامہ محمد اقبالؒ کے شاہین والی صفات پیدا کرنی ہیں۔ نظریاتی سمر سکول کے دوسرے روز آن لائن سیشن میں تحریک پاکستان کے سرگرم کارکن اور سابق وائس چیئرمین نظریہئ پاکستان ٹرسٹ پروفیسر ڈاکٹر رفیق احمد مرحوم کے خطاب کی ویڈیو ریکارڈنگ بھی دکھائی گئی۔ اس خطاب میں ڈاکٹر رفیق احمد کا کہنا تھاپاکستان عطیہئ خدواندی ہے اور قدرت نے اسے ہر طرح کے وسائل سے نواز رکھا ہے۔مسلمانان برصغیر نے قائداعظمؒ کی ولوہ انگیز قیادت میں دوقومی نظریہ کی بنیاد پر قیام پاکستان کی تاریخ ساز جدوجہد میں حصہ لیا۔طلبہ حصول علم پر توجہ مرکوز رکھیں، تعلیم سے ہی قومیں ترقی کی منازل طے کرتی ہیں۔ مسلمانوں نے سائنس اور علم کی بدولت ہی دنیا پر حکمرانی کی لہٰذا ہمیں ایک بار پھر آج سائنس اور علم پر توجہ دینی چاہئے۔آپ بڑے ہو کر ملکی تعمیر و ترقی میں اپنا بھرپور کردار اداکرنے کا عزم کریں۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -