شادی ہالوں کو ایس او پیز کیساتھ کھولنے کی اجازت دی جائے،اخونزادہ تاج بادشاہ

شادی ہالوں کو ایس او پیز کیساتھ کھولنے کی اجازت دی جائے،اخونزادہ تاج بادشاہ

  

پشاور (سٹی رپورٹر)خیبر پختونخوا کے شادی ہالز مالکان نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ شادہ ہالز کو ایس او پیز کیساتھ کھولنے کی اجازت دی جائے کینوکہ شادی ہالز کی بندش کی وجہ سے ہزاروں ملازمین فاقہ کشی پر مجبور ہے جبکہ شادی ہالز مالکان کا بھی کروڑوں روپے نقصان ہوا ہے اور مالکان مزید نقصان برداشت نہیں کر سکتے جبکہ شادی ہالز کے نقصنات کے ازالہ کیلئے امدادی پیکج کا اعلان کیا جائے اور سال 2020-21 کے ٹیکس معاف کیے جائے اس حوالے سے گزشتہ روز شادی ہالز ایسو سی ایشن کا اجلاس منعقد ہو جسمیں شادی ہالز مالکان نے کثیر تعداد میں شرکت کی اجلاس میں اخونزادہ تاج بادشاہ نے کہا کہ صوبے میں نوشہرہ سمیت تقریباً 400 شادی ہالز کے ہزاروں ملازمین فاقہ کشی پر مجبور ہیں، جہاں ایک جانب شادی ہالز مالکان دن بدن قرضوں تلے دب رہے ہیں تو دوسری طرف شادی ہالز کی بندش سے ہزاروں ملازمین بدحالی کا شکار ہیں، انہوں نے کہا کہ صوبے کے قریباً 400 شادی ہالز میں زیادہ تر ملازمین وہ پڑھے لکھے نوجوان ہیں جو نوکری نہ ملنے کے باعث ان شادی ہالز میں ملازمت اختیار کئے ہوئے ہیں انہوں نے کہا کہ ایسو او پیز کیساتھ شادی ہالز کو کھولا جا سکتا ہے جبکہ شادی ہالز میں تقریبات کیلئے کم سے کم افراد کو انے کیلئے ایس او پیز بنا سکتے ہیں جبکہ حکومت کو ایس او پیز پر عمل درآمد کی مکمل یقین دہانی کروسکتے ہیں لیکن شادی ہالز کی مزید بندش کے متھال نہیں ہو سکتے کیونکہ بندش کی وجہ سے کروڑوں روپے کا نقصان ہوا ہے اجلاس میں ایس او پیز کے ساتھ شادی ہالز کھولنے کا مطالبہ کیا گیا جبکہ سال 2020-21کے ٹیکسز معاف کرنے سمیت شادی کے نقصنات کے ازالہ کیلئے امدادی پیک کا بھی مطالبہ کیا گیا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -