کیادھرنا فیصلے سے آسمان گرپڑا ؟،اگرنظرثانی درخواست خارج ہوتی ہے تو کیا آسمان گر پڑے گا ،جسٹس عمر عطابندیال

کیادھرنا فیصلے سے آسمان گرپڑا ؟،اگرنظرثانی درخواست خارج ہوتی ہے تو کیا ...
کیادھرنا فیصلے سے آسمان گرپڑا ؟،اگرنظرثانی درخواست خارج ہوتی ہے تو کیا آسمان گر پڑے گا ،جسٹس عمر عطابندیال

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ میں جسٹس قاضی فائزعیسیٰ کی درخواست پر جسٹس عمر عطابندیال نے کہاکہ کیادھرنا فیصلے سے آسمان گرپڑا ؟،اگرنظرثانی درخواست خارج ہوتی ہے تو کیا آسمان گر پڑے گا ۔

سپریم کورٹ صدارتی ریفرنس کیخلاف جسٹس قاضی فائزعیسیٰ کی درخواست پر سماعت جاری ہے ،جسٹس عمر عطابندیال کی سربراہی میں 10 رکنی لارجر بنچ سماعت کررہا ہے،حکومتی وکیل بیرسٹر فروغ نسیم نے دلائل دیتے ہوئے کہاکہ کسی قسم کی منی ٹریل نہیں دی گئی،عدالت نے ایف بی آر کو بھیجنے کی تجویز دی تو انکار کردیا گیا، فروغ نسیم نے کہاکہ درخواست گزارکہتے ہیں دھرنا فیصلے کی وجہ سے کچھ حلقے خوش نہیں ۔

جسٹس مقبول باقر نے کہاکہ دھرنا فیصلہ جسٹس قاضی فائزعیسیٰ نے تحریرکیا ،جسٹس منصور علی شاہ نے کہاکہ نظرثانی کے مقدمے میں دونوں ججز کا ذکر نہیں،جسٹس مقبول باقر نے کہاکہ الزام ہے نظرثانی مقدمے میں جج کو ہٹانے کی بات کی گئی۔

جسٹس عمر عطابندیال نے کہاکہ کیادھرنا فیصلے سے آسمان گرپڑا ؟،اگرنظرثانی درخواست خارج ہوتی ہے تو کیا آسمان گر پڑے گا ۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -