جسٹس قاضی فائزعیسیٰ کی اہلیہ ساڑھے 3 بجے بیان ریکارڈ کرائیں گی ،سپریم کورٹ میں سماعت ملتوی

جسٹس قاضی فائزعیسیٰ کی اہلیہ ساڑھے 3 بجے بیان ریکارڈ کرائیں گی ،سپریم کورٹ ...
جسٹس قاضی فائزعیسیٰ کی اہلیہ ساڑھے 3 بجے بیان ریکارڈ کرائیں گی ،سپریم کورٹ میں سماعت ملتوی

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ صدارتی ریفرنس کیخلاف جسٹس قاضی فائزعیسیٰ کی درخواست پر سماعت ڈھائی بجے تک ملتوی کردی گئی،جسٹس عمر عطابندیال نے کہاکہ جسٹس قاضی فائزعیسیٰ کی اہلیہ ساڑھے 3 بجے بیان ریکارڈ کرائیں گی۔

سپریم کورٹ صدارتی ریفرنس کیخلاف جسٹس قاضی فائزعیسیٰ کی درخواست پر سماعت جاری ہے ،جسٹس عمر عطابندیال کی سربراہی میں 10 رکنی لارجر بنچ سماعت کررہا ہے،جسٹس عمرعطا بندیال نے کہاکہ درخواست گزار کی دلیل ہے جج کو ہٹانے کامعاملہ بڑا سیریس ایشو ہے،دلیل دی گئی یہ معاملہ کابینہ میں جاناچاہئے تھا۔

حکومتی وکیل بیرسٹر فروغ نسیم نے کہاکہ جج کی تقرری کاجائزہ کابینہ نہیں لیتی ،جسٹس عمرعطابندیال نے کہاکہ جج کی تقرری کاطریقہ ہی مختلف ہے ،فروغ نسیم نے کہاکہ صدرمملکت وزیراعظم کی ایڈوائس پر عمل کے پابند ہیں ۔

جسٹس مقبول باقر نے کہاکہ صدرمملکت کے اعتراض پر دوسری مرتبہ ایڈوائس کی کیاضرورت ہے؟،ریفرنس کی سمری پر رائے صدرنے آزادانہ طور پر طے کرنی ہے ،فروغ نسیم نے کہاکہ سیکرٹری قانون سے لے کر اوپر تک سب نے اپنا مائنڈاپلائی کیا ،جسٹس مقبول باقر نے کہاکہ صدرمملکت کو رائے بنانے کی ضرورت نہیں ،صدرمملکت اپنا ذہن اپلائی کرتے ہیں ،صدرمملکت کے سامنے کوئی مواد نہیں تھا،الزامات پر مبنی دستاویزات تھیں ۔

جسٹس عمر عطابندیال نے کہاکہ ہم نے آج جج کی اہلیہ کا موقف بھی سننا ہے،منیر اے ملک نے کہاکہ عدالت کا حکم میں نے پہنچا دیا تھا اہلیہ الزامات کے حوالے سے جواب دیں گی،امید کرتا ہوں اہلیہ کا جواب زیادہ طویل نہیںہوگا،جسٹس عمر عطابندیال نے کہاکہ کیا اہلیہ صرف جائیداد کے حوالے سے جواب دیں گی ،منیر اے ملک نے کہاکہ جسٹس قاضی فائزعیسیٰ کی اہلیہ اپنے اوپر لگائے گئے الزامات کاجواب دیں گے ۔

عدالت نے کہاکہ جسٹس قاضی فائزعیسیٰ کی اہلیہ ساڑھے 3 بجے بیان ریکارڈ کرائیں گی ،عدالت نے جسٹس قاضی فائزعیسیٰ کیس کی سماعت ڈھائی بجے تک ملتوی کردی۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -