’اب ایئرہوسٹسز مسکراتی نظر نہیں آتیں‘ مسافروں کی جانب سے شکایات کے بعد ایئرلائن کا ایئرہوسٹسز کو ماسکس اُتارنے کا حکم

’اب ایئرہوسٹسز مسکراتی نظر نہیں آتیں‘ مسافروں کی جانب سے شکایات کے بعد ...
’اب ایئرہوسٹسز مسکراتی نظر نہیں آتیں‘ مسافروں کی جانب سے شکایات کے بعد ایئرلائن کا ایئرہوسٹسز کو ماسکس اُتارنے کا حکم

  

جکارتہ(مانیٹرنگ ڈیسک) دیگر فضائی کمپنیوں کی طرح انڈونیشیاءکی قومی ایئرلائنز گیروڈا نے بھی اپنے عملے پر فیس ماسک پہننا لازمی قرار دے رکھا تھا لیکن گزشتہ روز اس کی ایئرہوسٹسز کو فیس ماسک پہننے سے روک دیا گیا ہے جس کی وجہ ایسی ہے کہ سن کر آپ دنگ رہ جائیں گے۔ دی جکارتہ پوسٹ کے مطابق گیروڈا کے صدر عرفان سیتیاپترا کاکہنا ہے کہ انہیں مسافروں کی طرف سے بڑی تعداد میں شکایات موصول ہوئیں کہ وہ فیس ماسک کی وجہ سے استقبال کے لیے کھڑی اور دوران سفر سروس مہیا کرنے والی ایئرہوسٹسز کی مسکراہٹ نہیں دیکھ پاتے۔ چنانچہ ان پر عائد فیس ماسک کی پابندی ختم کی جائے۔

عرفان سیتیاپترا کا کہنا تھا کہ مسافروں کے اس مطالبے کے بعد انتظامیہ نے ایئرہوسٹسز پر عائد یہ پابندی ختم کر دی ہے اور انہیں فیس ماسک نہ پہننے کو کہہ دیا گیا ہے۔چونکہ ہمارے لیے عملے اور مسافروں کا تحفظ اور سکون سب سے اہم ہیں لہٰذا ہم ایئرہوسٹسز پر فیس ماسک کی پابندی ختم کرنے کے باوجود کورونا وائرس کے پھیلاﺅ کو روکنے کے لیے اقدامات کر رہے ہیں۔ اس مقصد کے لیے ایئرہوسٹسز کو مسافروں سے مناسب فاصلہ رکھنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -