نریندرا مودی چینی صدر سے ناراض، ان کو کیا سزا دی؟ جان کر آپ کو بھی ہنسی آجائے

نریندرا مودی چینی صدر سے ناراض، ان کو کیا سزا دی؟ جان کر آپ کو بھی ہنسی آجائے
نریندرا مودی چینی صدر سے ناراض، ان کو کیا سزا دی؟ جان کر آپ کو بھی ہنسی آجائے

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) تبت کے علاقے میں چینی اور بھارتی فوجوں کے درمیان ٹکراﺅ کی وجہ سے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی چینی صدر شی جن پنگ سے ناراض ہیں اور انہوں نے شی جن پنگ کو ایسی سزا دے ڈالی ہے کہ سن کر آپ کو ہنسی آ جائے گی۔ ٹیلیگراف انڈیا کے مطابق نریندر مودی نے ناراضگی کی وجہ سے صدر شی جن پنگ کو یہ سزا دی ہے کہ اس سال انہوں نے صدر شی جن پنگ کو سالگرہ کی مبارکباد نہیں دی۔

رپورٹ کے مطابق 15جون کو صدر شی جن پنگ کی سالگرہ ہوتی ہے اور وزیراعظم مودی 2016ءسے ہر سال انہیں سالگرہ کی مبارکباد دیتے آ رہے ہیں۔ اس سال یہ پہلا موقع ہے کہ انہوں نے صدر شی جن پنگ کو مبارکباد نہیں دی۔ 2016ءمیں وزیراعظم مودی نے چینی سوشل میڈیا پلیٹ فارم وائبو پر چینی زبان میں صدر شی جن پنگ کو سالگرہ کی مبارک دیتے ہوئے لکھا تھا کہ ”صدر شی جن پنگ کو سالگرہ کی مبارکباد۔ میں ان کی طویل زندگی اور اچھی صحت کے لیے دعاگو ہوں۔“ 2017ءمیں صدر شی جن پنگ کو سالگرہ کی مبارکباد کے 2دن بعد ڈوکلام کا سٹینڈ آف شروع ہو گیا جس میں 73دن تک چینی و بھارتی افواج آمنے سامنے کھڑی رہی۔ اس کے بعد 2018ءاور 2019ءمیں بھی انہوں نے صدر شی کو مبارک باد دی۔ 2020ءپہلا سال ہے کہ وزیراعظم مودی نے صدر شی جن پنگ کو مبارک باد نہ دے کر انہیں خود کو ناراض کرنے کی سزا دے ڈالی ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -