شاہ محمود قریشی کی ازبکستان اورکرغزستان کے وزرائے خارجہ سے ملاقات ، خطے میں قیام امن کیلئے مشترکہ کوششیں بروئے کار لانے پر اتفاق 

شاہ محمود قریشی کی ازبکستان اورکرغزستان کے وزرائے خارجہ سے ملاقات ، خطے میں ...
شاہ محمود قریشی کی ازبکستان اورکرغزستان کے وزرائے خارجہ سے ملاقات ، خطے میں قیام امن کیلئے مشترکہ کوششیں بروئے کار لانے پر اتفاق 

  

انقرہ(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے ترکی میں منعقدہ انطالیہ سفارتی فورم کے موقع پر ازبکستان اور کرغزستان کے وزرائے خارجہ، عبدالعزیز کامیلوف اور قزاق بائف کے ساتھ ملاقات کی جس میں دو طرفہ تعلقات ،مختلف شعبہ جات میں دو طرفہ تعاون کے فروغ سمیت باہمی دلچسپی کے اہم علاقائی و عالمی امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

شاہ محمود قریشی نےعبدالعزیز کامیلوف سےملاقات کرتےہوئےکہاکہ پاکستان،ازبکستا ن کو وسط ایشیائی ممالک میں ایک اہم برادر ملک سمجھتا ہے، پاکستان اور ازبکستان کے درمیان عقیدے، مشترک تاریخ اور ثقافتی ہم آہنگی پر مبنی خوشگوار تعلقات استوار ہیں۔ انہوں نے کہاکہ کثیرجہتی شعبہ جات میں دوطرفہ تعاون کے فروغ سے، دو طرفہ تعلقات کو مزید مستحکم بنانے میں مدد ملی، گذشتہ تین برسوں میں ہمارے تجارتی و اقتصادی روابط میں خاطر خواہ اضافہ ہوا ہے۔ انہوں نے کہاکہ وزیر اعظم عمران خان اور ازبکستان کے صدر شوکت میرزیوئیف کے درمیان ہونیوالے پہلے ورچوئل سربراہی اجلاس کو دونوں جانب سراہا گیا ،اس ورچوئل اجلاس سے پاکستان اور ازبکستان کے درمیان مختلف شعبہ جات میں دو طرفہ تعاون کا تجزیہ کرنے اور انہیں مزید مستحکم بنانے کیلئے رہنمائی ملی -

شاہ محمود قریشی نے کہاکہ پاکستان اور ازبکستان کے مابین ریل کا منصوبہ دونوں ممالک کے درمیان تجارتی اور عوامی روابط کو مزید فروغ دے گا، وزیر خارجہ نے کہا کہ اقتصادی تعاون کا فروغ ہماری حکومت کی اولین ترجیح ہے ، ہم ازبکستان سمیت وسط ایشیائی ریاستوں کے ساتھ روابط بڑھانا چاہتے ہیں۔

دونوں وزرائے خارجہ کے مابین افغان امن عمل کے حوالے سے بھی تبادلہ خیال ہوا ۔ انہوں نے کہاکہ افغانستان میں قیام امن نہ صرف افغانوں کیلئے بلکہ پورے خطے کی تعمیر و ترقی کیلئے ناگزیر ہے، دونوں وزرائے خارجہ نے پاکستان، ازبکستان کے درمیان معاشی شراکت داری کے فروغ اور خطے میں قیام امن کیلئے مشترکہ کوششیں بروئے کار لانے پر اتفاق کیا گیا ۔

وزیر خارجہ قزاق بائف سے ملاقات کرتےہوئےشاہ محمود قریشی کاکہناتھاکہ پاکستان اور کرغزستان کے مابین یکساں تاریخی، ثقافتی و تہذیبی اقدار کی بنیاد پر استوار، گہرے دو طرفہ تعلقات ہیں۔پاکستان، توانائی کے شعبے میں تعاون بڑھانے کیلئے کاسا 1000 جیسے اہم منصوبوں کی جلد تکمیل کا خواہاں ہے،پاکستان، اپنی اقتصادی ترجیحات کو پیش نظر رکھتے ہوئے، وژن سنٹرل ایشیا" کے تحت وسط ایشیائی ممالک کے ساتھ روابط کے فروغ ، دیرپا اقتصادی شراکت داری کے حصول کیلئے کوشاں ہے۔

مزید :

قومی -