سید حسن مرتضی ایک بار پھر پنجاب حکومت پر برس پڑے ، ایسی بات کہہ دی کہ فیاض الحسن چوہان بھی تڑپ اٹھے

سید حسن مرتضی ایک بار پھر پنجاب حکومت پر برس پڑے ، ایسی بات کہہ دی کہ فیاض ...
سید حسن مرتضی ایک بار پھر پنجاب حکومت پر برس پڑے ، ایسی بات کہہ دی کہ فیاض الحسن چوہان بھی تڑپ اٹھے

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)پنجاب اسمبلی میں  پیپلز پارٹی کے پارلیمانی لیڈر سیدحسن مرتضی نے کہاہے کہ اس حکومت کو کلرک چلا رہے ہیں ،اس حکومت سے نہ عوام اور نہ ہی اپوزیشن برداشت ہوتی ہے ،یہ حکومت صرف گالم گلوچ پر اپنی حکمرانی قائم کیے ہوئے ہے ،یہ بڑا ظلم ہے کہ ابھی تک قائمہ کمیٹیاں فعال نہیں ہو سکیں،اس حکومت کا طرہ امتیاز ہے کہ اس نے آمرانہ طریقے سے پنجاب کو چلایا ہے ،آج اسمبلی کے اندر بھی اور باہر بھی کچرا ہے ،ہزاروں کی تعداد میں منتخب بلدیاتی نمائندوں کو بے توقیر کیا گیا، تحریک انصاف کے جوان عمران خان سے اختلاف بھی کرتے ہیں اور ان کا ساتھ بھی دیتے ہیں ،اگر ہم عدالتی حکم کی پاسداری نہیں کر سکتے تو پھر ہم کچھ بھی نہیں کر سکتے ،تحریک انصاف اس ملک میں اختلافات پیدا کر رہی ہے ،عوامی نمائندئے سپریم کورٹ کے حکم سے بحال ہوئے ،پنجاب میں آدھی اپوزیشن ہے مگر ترقیاتی سکیمیں صرف تحریک انصاف کو دی جا رہی ہیں ،عوامی مینڈیٹ کو چرا کر ایک حکومت کو عوام پر مسلط کیا گیا ،یہ واحد حکومت ہے جو اپوزیشن پر حملے کر رہی ہے۔

پنجاب اسمبلی میں  بجٹ پر بحث کا آغاز کرتے ہوئے سید حسن مرتضیٰ نے کہا کہ بجٹ میں تنخواہوں میں دس فیصد اضافہ ہوا مگر مہنگائی میں سو فیصد اضافہ کر دیا گیا ،پیپلز پارٹی اور (ن) لیگ کے دور میں بھی مہنگائی تھی مگر تنخواہوں میں اضافہ سو فیصد کیا گیا ،اس بجٹ میں عوام کو جتنا ریلیف دیا اس سے دوگنا عوام سے لے لیا گیا،پاکستان کے کسی بھی کونے میں چلے جائیں،خواہ اسمبلی میں آئیں کوڑے کے ڈھیر نظر آئیں گے۔سپریم کورٹ کے حکم کے باوجود بلدیاتی اداروں کو بحال نہ کرکے حکومت ملک میں افراتفری کو ہوا دے رہی ہے،اگر حالات خراب ہوئے تو ذمہ دار وزیر اعلی پنجاب ہوں گے ۔

انہوں نے کہا کہ بتایا جائے کن قوانین کے تحت فنڈز تقسیم کیے جارہے ہیں،فنڈز تقسیم کرنے کے عمل کو کسی کی ذاتی جاگیر نہ بنایا جائے ،حکومت تعصب پر قائم ہے ، اس حکومت کے پاس کوئی مینڈیٹ نہیں ۔صوبائی وزیر جیل خانہ جات فیاض الحسن چوہان نے ڈپٹی سپیکر سے نقطہ اعتراض پر بات کرنے کی اجازت طلب کی تاہم سپیکر نے انہیں کہا کہ اپنی باری پر بات کیجیے گا ۔ اس موقع پر فیاض الحسن چوہان پیپلز پارٹی کے پارلیمانی لیڈر حسن مرتضی سے معافی مانگنے کا مطالبہ کرتے ہوئے نقطہ اعتراض پر بات کرنے کی اجازت طلب کرتے رہے ۔انہوں نے اجازت نہ ملنے کے باوجود اپنی بات جاری رکھی اور کہا کہ حسن مرتضی نے پی ٹی آئی پر غلط تنقید کی یہ اس پر معافی مانگیں ، انہوں نے محنت کشوں کو کمی کہا ،ڈپٹی سپیکر نے فیاض الحسن چوہان کو بات کرنے سے روکا تو وہ احتجاجاً ایوان سے واک آؤٹ کر گئے۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -