”پاکستان“کی خبر پر ایکشن، آفیسرز کوآپریٹو سوسائٹی کے حکام ریکارڈ سمیت طلب

”پاکستان“کی خبر پر ایکشن، آفیسرز کوآپریٹو سوسائٹی کے حکام ریکارڈ سمیت طلب

  

لاہور(اپنے نمائندے سے)رائے ونڈ روڈ پر واقع گورنمنٹ آفیسر کو آپریٹو سوسائٹی میں محکمہ کو آپریٹو کے ماڈل بائی لاز بے اثر ہو گئے روزنامہ پاکستان میں خبر کی اشاعت کا نوٹس لے لیا گیا ڈی او سی لاہور نے متعلقہ کو آپریٹو سوسائٹی کو ریکارڈ سمیت طلب کر لیا جبکہ سیکرٹری کی جانب سے بائی لاز کی خلاف ورزی پر مبنی درخواست کی سماعت بھی شروع کر دی گئی مزید معلوم ہواکہ گورنمنٹ آفیسر کو آپریٹو سوسائٹی کے جنرلسیکرٹری پرویز محبوب ملک اور دیگر ممبران نے محکمہ کو آپریٹو میں درخواست دیتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ مذکورہ سوسائٹی کے صدر فرخ احمد خان اور فنانس سکرٹری نذیر ملک نے کو آپریٹو سوسائٹی ماڈل بائی لاز کی خلاف ورزی کرنے کا سلسلہ شروع کر رکھا ہے درخواست کے مطابق بائی لاز کی شق نمبر ( 41(2 میں تحریر ہے کہ فنڈز کی پیمنٹ کو ٹرانسفر کرتے وقت قوانین کو مدنظر رکھا جائے گا جس کے مطابق سوسائٹی ملازمین کو تنخواہ ،وچرز ،بلزوغیرہ کی ادائیگی بذریعہ چیک کی جائے گی نقد ادائیگی صرف سیکرٹری اور کمیٹی کے دستخط کے بعد جاری کی جائے گی تاہم صدر سوسائٹی اور فنانس سکرٹری برائے راست ادائیگیاں خود کرنے میں مصروف ہیں ماڈل بائی لاز کی شق نمبر (12)39 اور (b)39میں واقع تحریر ہے کہ سوسائٹی کے اخراجات اور خریدوفروخت سیکرٹری کی اجازت کے بغیر ممکن نہیں تاہم گزشتہ ایک سال سے ہر ماہ تقریبا 6لاکھ روپے کے مختلف اخراجات کی مد میں جو ادائیگیاں کی جارہی ہیں وہ بھیسیکرٹری اور دیگر کمیٹی کے ممبران کی اجازت کے بغیر کی جا رہی ہیں اس کے علاوہ ماڈل بائی لاز کی شق نمبر (2) 41کے مطابق صدر اور فنانس سیکرٹری کسی بھی صورت رقم کی ادائیگی خود اپنی ضمانت پر نہیں کر سکتے تاہم ہیڈ آفس میں کام کرنے والے سٹاف کی تنخواہیں رائے ونڈ سٹاف کی تنخواہیں صدر اور فنانسسیکرٹری نے اپنی مرضی سے تقسیم کی ہیں اس کے علاوہ سیکرٹری کی جانب سے سوسائٹی کا آڈٹ کروانے کے حوالے سے بھی باربار یاد دہانی کروائی گئی جو کہ سیکشن B۔22کے مطابق ضروری ہے لیکن اس کی طرف بھی کوئی توجہ نہیں دی جارہی ۔محکمہ کے بائی لاز کو پس پشت ڈالنے والوں کے خلاف محکمہ کو آپریٹو سے قانونی کارروائی کرنے کی استدعا کی گئی دوسری جانب روزنامہ پاکستان میںخبر کی اشاعت کے بعد ڈی او سی نے بھی مذکورہ سوسائٹی انتظامیہ کو ریکارڈ سمیت طلب کر لیا اور سکرٹری پرویز محبوب ملک کی جانب سے دی جانے والی درخواست کی سماعت بھی شروع کر دی گئی نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر سوسائٹی انتظامیہ کے اہم ممبر نے آگاہی دی کہ سوسائٹی ھذا میں ایک روپے کی بھی کرپشن نہیں کی گئی جس کا باقاعدہ چیلنج کرتے ہیں صدر سوسائٹی انتہائی شریف اور باعزت ہیں مذکورہ ممبران کی ساکھ اور کارکردگی بہتر نہیں آئندہ ادائیگی بذریعہ چیک کی جائے گی قبل ازیں جو ادائیگیاں کی گئی ان میںنیک نیتی شامل تھی کیوں کہ ان پڑھ اوردیہاتی عملہ اپنی محنت کی کمائی کے لیے لاہور کے بنک کے باہر کھڑا ہوتا اور خوار ہوتاصرف خواری سے بچانے کے لیے یہ اقدام اٹھایاگیا تھا جو کہ اگلے ماہ سے بذریعہ چیک ہی ہوگا جس کا دل کر تا ہے وہ آکر آڈٹ کر لے ایک سوال پر مزید آگاہی دی گئی کہ ادائیگی اور رقم تقسیم کے اختیارات صدر اور فنانس سیکرٹری کو بھی حاصل ہیں الزامات بے بنیاد ہیں

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -