ریلوے لینڈ کمپیوٹرائزڈ کرنے کا کام ڈیرھ سال میں مکمل کر لیا جائیگا

ریلوے لینڈ کمپیوٹرائزڈ کرنے کا کام ڈیرھ سال میں مکمل کر لیا جائیگا

  

لاہور( سٹاف رپورٹر)پنجاب میں ریلوے کی زمینوں کو کمپیوٹرائزڈ کرنے کا کام 18 ماہ میں مکمل کر لیا جائے گا۔ یہ بات پراجیکٹ مینجمنٹ یونٹ پنجاب کے ڈائریکٹر ڈاکٹر ناصر نے بتائی۔گزشتہ روزوزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق کی صدارت میں ریلوے ہیڈکوارٹرز آفس لاہور میں اجلاس منعقد ہوا جس میں ریلوے کی زمینوں کو کمپیوٹرائزڈ کرنے سے متعلق امور زیر بحث آئے۔ ڈاکٹر ناصر نے اپنے وفد کے ہمراہ بریفنگ پیش کی اور اب تک کی پیش رفت سے متعلق وزیر ریلوے کو آگاہ کیا ۔ وزیر ریلوے نے ریلوے کی زمینوں کے ٹائٹل کا خصوصاً ذکر کیا جہاں صوبائی حکومتوں سے معاملات طے کئے جا رہے ہیں۔ دریں اثناء”ریلوے لینڈ مینجمنٹ سسٹم“ کے تحت ریلوے کی زمینوں کو کمپیوٹرائزڈ کرنے کا کام شروع کیا جا رہا ہے اور پہلے مرحلے میں اہداف کا تعین کرنے کے لیے ایک اعلیٰ سطحی کمیٹی تشکیل دے دی گئی ہے جو چند روز میں اپنی سفارشات وزیر کو پیش کرے گی۔ اجلاس میں چیئرمین ریلوے مسز پروین آغا ، جنرل منیجر ریلوے انجم پرویز سمیت لینڈ اورفنانس ڈیپارٹمنٹ ریلوے کے اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔ خواجہ سعد رفیق نے ریلوے زمینوں کو کمپیوٹرائزڈ کرنے کیلئے کوششیں تیز کر نے کے احکام دیتے ہوئے افسران کو ہر طرح سے مدد کی یقین دہانی بھی کرائی۔

ریلوے اجلاس



مزید :

صفحہ آخر -