لالچی دوستوں نے ڈیڑ ھ لاکھ ہتھیا نے کیلئے جاوید اختر کو زہر دینے کے بعد تشدد کرکے ہلاک کیا

لالچی دوستوں نے ڈیڑ ھ لاکھ ہتھیا نے کیلئے جاوید اختر کو زہر دینے کے بعد تشدد ...

  

       لاہور(لیاقت گھرل) فیکٹری ایریا کے علاقہ میں تین کمسن بچوں کے باپ کی ہلاکت کے پس پردہ دوستوں کا رقم ہتھیانے کا لالچ کارفرما تھا، ڈیڑھ لاکھ کی خاطر لالچی دوستوں نے اپنے ساتھی جاوید اختر کو زہر خورانی کے بعد رسیوں میں جکڑ کر تشدد سے ہلاک کیا۔ مقتول سبزی منڈی میں آڑھتی اوربیوی بچوں کے ہمراہ عمرہ کی سعات حاصل کرنے کے لئے تیاریوں میں مصروف تھا۔ والٹن روڈ ماڈل کالونی میں 30 سالہ آڑھتی جاوید اختر کی ہلاکت کے اصل حقائق جاننے کیلئے نمائندہ ”پاکستان“ نے علاقے کا دورہ کیا تو اس بات کا انکشاف ہوا کہ جاوید اختر کو اس کے دوستوں عرفان اور راجو وغیرہ نے رات کو بہانے سے بلا کر نشہ آور چیز کھلائی اور جاوید اختر کی حالت غیر ہونے پر پاﺅں کو رسیوں سے جکڑ کر تشدد کا نشانہ بنانے کے دوران جیب سے ڈیڑھ لاکھ روپے نکال لئے ، جب جاوید اختر کی حالت سنبھل نہ سکی تو ادھ موئے حالت میں گھر کے دروازے پر پھینک کر فرار ہوگئے جس کے باعث جاوید اختر گھر پہنچتے ہی ہلاک ہوگیا۔ مقتول جاوید اختر کے بیٹے کی گزشتہ روز سالگرہ تھی جبکہ وہ بیوی بچوں کے ہمراہ عمرہ کی سعادت حاصل کرنے کی تیاریوں میں مصروف تھا کہ خوشیوں والے گھر میں صف ماتم بچھ گئی۔ مقتول کی بیوہ اور والدہ پر غشی کے دورے پڑتے رہے، مقتول کی والدہ روبینہ کوثر ، والد محمد رفیق نے ”پاکستان“ کو بتایا کہ جاوید اختر نے وقوعہ سے چند گھنٹے قبل اپنی موٹر سائیکل فروخت کی اور بڑے بھائی اور محلے دار دو دکانداروں سے 65 ہزار روپے اور 20 ہزار بڑے بھائی شکیل سے ادھار لئے جبکہ والدہ نے بتایا کہ 30 ہزار روپے اس سے بھی لئے اور ڈیڑھ لاکھ کے قریب رقم جیب میں ڈال کر رات کو سبزی منڈی جانے لگا کہ اس کے دوست عرفان وغیرہ نے اسے بلایا اور اپنے ساتھ لے گئے۔ والدہ کے مطابق اس کے بیٹے کو اس کے دوستوں عرفان اور راجو وغیرہ نے ڈیڑھ لاکھ روپے ہتھیانے کی خاطر اسے نشہ آور چیز کھلا کر بے ہوش کیا اور پاﺅں کو رسیوں سے جکڑ کر تشدد کا نشانہ بھی بنایا اور رقم چھین کر ادھ موا کر کے گھر پھینک گئے، مقتول کے والد رفیق، بڑے بھائی محمد شکیل، ماموں قمر علی اور خالو اشرف محمد نے بتایا کہ جاوید اختر جب گھر آیا تو اس کی حالت غیر تھی جبکہ پاﺅں پر رسیوں کے نشانات تھے اور جیب سے نقدی غائب تھی۔ تفتیشی افسر سب انسپکٹر نواز شاہ نے بتایا کہ پوسٹ مارٹم کی ابتدائی رپورٹ میں جاوید اختر کی ہلاکت زیر خورانی اور جسم پر تشدد کے نشانات سامنے آئے ہیں تاہم فرانزک سائنس لیبارٹری کی رپورٹ کے بعداصل صورتحال سامنے آئے گی۔دوسری جانب ملزمان کے گھروں پر تالے لگے ہوئے ہیں اور گرفتاری کیلئے چھاپے مارے جارہے ہیں۔

مزید :

علاقائی -