مصطفی کمال کے الزامات کی بنیاد پر ایم کیو ایم کیخلاف تحقیقات کیلئے جوڈیشل کمیشن بنانے کی درخواست خارج

مصطفی کمال کے الزامات کی بنیاد پر ایم کیو ایم کیخلاف تحقیقات کیلئے جوڈیشل ...

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے مصطفی کمال کے الزامات کی بنیاد پر ایم کیو ایم کے خلاف تحقیقات کے لئے جوڈیشل کمیشن بنانے کی درخواست ناقابل سماعت قرار دے کر خارج کردی ۔مسٹر جسٹس شاہد وحید نے علی گیلانی نامی شہری کی طرف سے دائر یہ درخواست خارج کرتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ جوڈیشل کمشن بنانا عدالت کا کام نہیں بلکہ کسی معاملے کی تحقیقات کے لئے کمشن قائم کرنا وفاق کا صوابدیدی اختیار ہے۔درخواست گزار کا موقف تھاکہ مصطفی کمال سمیت دیگر رہنماؤں نے متحدہ قومی موومنٹ پر سنگین نوعیت کے الزامات لگائے ہیں جبکہ بھارتی خفیہ ایجنسی را سے بھی فنڈنگ لینے کا الزام عائد کیا گیا ہے، ایم کیو ایم کے رہنماؤں کے بیانات پر مبنی اخباری تراشے درخواست کے ساتھ منسلک ہیں لہذا ان الزامات کی تحقیقات کے لئے جوڈیشل کمشن بنانے کا حکم دیا جائے، عدالت نے استفسار کیا کہ وہ کون سا قانون ہے جس کے تحت ہائیکورٹ کمیشن بنانے کا کہہ سکتی ہے ۔درخواست گزار عدالت کو مطمئن نہ کر سکے، عدالت نے قرار دیا کہ ایف آئی اے اس معاملے کی تحقیقات کر رہا ہے، درخواست گزار کو ایف آئی اے سے رجوع کرنا چاہیے، ہائیکورٹ تفتیشی افسر کا کردار ادا نہیں کر سکتی اور نہ ہی محض اخباری تراشوں کی بنیاد پر جوڈیشل کمیشن بنانے کا حکم دیا جا سکتا ہے، عدالت نے دلائل سننے کے بعد ایم کیو ایم کے خلاف جوڈیشل کمیشن بنانے کی درخواست ناقابل سماعت قرار دے کر خارج کر دی۔

مزید :

صفحہ آخر -