پنجاب میں 300سے زائد دہشتگرد اور خطرناک مجرم گرفتار، 50مقابلوں میں ہلاک ہوئے

پنجاب میں 300سے زائد دہشتگرد اور خطرناک مجرم گرفتار، 50مقابلوں میں ہلاک ہوئے

  

لاہور (رپورٹ :محمد یونس باٹھ) سی ٹی ڈی پولیس نے سینکڑوں دہشتگردوں کو حراست میں لے رکھا ہے جن کے خلاف پنجاب کے مختلف اضلاع میں مقدمات بھی درج کئے گئے ہیں جبکہ پچھلے چند دنوں کے دوران 50سے زائد انتہائی خطرناک دہشتگرد سی ٹی ڈی کے ساتھ مقابلوں میں ہلاک بھی ہو ئے ہیں ۔سی ٹی ڈی پولیس کے سربراہ کا کہنا ہے کہ پنجاب میں ممکنہ دہشتگردی کے پیش نظر یہ آپریشن جاری رہے گا ،دہشتگردوں کے علاوہ ان کے سہولت کاروں کو بھی حراست میں لیا جا رہا ہے تاکہ پنجاب سے دہشتگردوں کا مکمل طور پر صفایا کیا جا سکے ۔باخبر ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ گزشتہ دو سال میں ایک ہزار سے زائد مذہبی دہشتگردوں اور سنگین جرائم میں ملوث ملزمان کی گرفتاری کے لیے سی ٹی ڈی پولیس کو ٹاسک دیا گیا تھا ۔نیشنل ایکشن پلان کے فورتھ شیڈول کی روشنی میں ان دہشتگردوں پر گھیرا تنگ کیا گیا اور سی ٹی ڈی پولیس نے لاہور ،ملتان ،بہاولپور ،جھنگ ،ٹوبہ ٹیک سنگھ ،گوجرانوالہ ،سیالکوٹ ،گجرات اور سرگودھا سمیت پنجاب کے دیگر اضلاع میں آپریشن کر کے اب تک 300سے زائد دہشتگردوں اور خطرناک مجرموں کو گرفتار کر لیا ہے جبکہ 100سے زئد سہولت کاروں کو بھی حراست میں لیا گیا ہے ۔حراست میں لیے جانے والوں میں ڈاکٹر ،پروفیسر،طالب علم ،وکلاء اور کئی مذہبی رہنما بھی شامل ہیں ۔سی ٹی ڈی پولیس کے مطابق دہشتگردوں کے خلاف انہیں بڑی کامیابیاں حاصل ہوئی ہیں جبکہ بعض جگہوں پر آپریشن کے دوران انہیں دہشتگردوں کے ساتھ فائرنگ کے تبادلوں کا بھی سامنا ہوا ہے جس میں اب تک درجنوں دہشتگرد ہلاک ہوئے ہیں ۔شہخوپورہ ،بہاولپور اور ننکانہ میں دہشتگردوں کے خلاف جب کارروائی عمل میں لائی گئی تو دہشتگرد وں نے ریڈ پر جانے والی پولیس پارٹی پر حملہ بھی کیا جوابی کارروائی میں وہ مارے بھی گئے ۔

مزید :

صفحہ آخر -