کرپشن ثابت ہونے پر کشٹمز کے 241افسروں کیخلاف کارروائی، 39کو سزائیں

کرپشن ثابت ہونے پر کشٹمز کے 241افسروں کیخلاف کارروائی، 39کو سزائیں

  

لاہور(شہباز اکمل جندران) ایف بی آر نے کرپشن کی شکایات اور الزامات سامنے آنے پرتین برسوں کے دوران کسٹمز کے 2سو 41افسروں کے خلاف کارروائی شروع کی گئی۔39افسروں کو سزائیں سنائی گئیں۔12کو وارننگ جاری کی گئی ۔جبکہ 157کے خلاف انکوائری زیر التوا ہیں۔وفاقی حکومت نے کرپشن کے الزامات میں ملوث افسروں کی تفصیلات طلب کرلی ہیں۔دوسری طرف ایف بی آر نے ملک بھر کے کسٹمز کلیکٹوریٹس کو کسٹمز افسروں کی زیر التواانکوائری جلد از جلد نمٹانے کے احکامات جاری کردیئے ہیں۔معلوم ہواہے کہ وفاقی محکمہ خزانہ نے ایف بی آر سے کسٹمز کے ایسے تمام افسروں کی تفصیلات طلب کرلی ہیں۔ جن کے خلاف گزشتہ تین برسوں کے دوران کرپشن کی شکایات سامنے آئیں یا پھر وہ رنگے ہاتھو ں پکڑے گئے۔بتایا گیا ہے کہ محکمہ خزانہ کی طرف سے تفصیلات طلب کئے جانے پر ایف بی آر نے آگاہ کیا کہ تین برسوں کے دوران کسٹمز کے 2سو41افسروں کے خلاف کرپشن کی شکایات سامنے آئیں۔ان میں سے 39افسروں کو سزائیں دی جاچکی ہیں۔جبکہ 157افسروں کے خلاف انکوائری زیر التوا ہیں۔ مزید تفصیلات فراہم کی گئی ہیں کہ کرپشن کے الزامات میں 12افسروں کو وارننگ جاری کی گئیں ہیں۔ اور 33افسروں کے خلاف الزامات ثابت نہ ہونے پر الزاما ت سے بری کردیا گیا ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ محکمہ خزانہ کی ہدایات پر ایف بی آر نے ملک بھر کے کسٹمز کلیکٹوریٹس کو کسٹمز افسروں کی زیر التواانکوائری جلد از جلد نمٹانے کے احکامات جاری کردیئے ہیں۔

مزید :

صفحہ آخر -