فورٹ منرو میں جدید سہولتوں کی فراہمی کے منصوبے پر عملدرآمد شروع

فورٹ منرو میں جدید سہولتوں کی فراہمی کے منصوبے پر عملدرآمد شروع

  

ملتان ( اعجاز مرتضیٰ سے)جنوبی پنجاب کے سیاحتی مقام میں جدید ترین سہولتوں کی فراہمی کے منصوبے پر عملدرآمد شروع ہو گیا‘ فورٹ منرو روڈ کو چوڑا کرنے کا کام ایک ماہ کے اند ر شروع ہوگا‘13ارب روپے لاگت کا منصوبہ جاپانی تعمیراتی کمپنی کو ایوارڈ کر دیا گیا‘ہائی وے بننے سے فورٹ منرو کا خطرناک سفر(بقیہ نمبر5صفحہ12پر )

سہل ہوجائے گا‘ باوثوق ذرائع کے مطابق پنجاب حکومت صحت افزا مقام فورٹ منرو کو جدید ترین سیاحتی مرکز بنانے کے منصوبے پر عمل پیرا ہے‘ اس سلسلے میں فورٹ منرو ڈویلپمنٹ اتھارٹی بھی تشکیل دی گئی ‘ اب فورٹ منرو کے پر خطر پہاڑی سفر کو سہل بنانے کے لئے بڑا منصوبہ بنا یا گیاہے ‘اس سلسلے میں جاپان انٹرنیشنل کو اپریشن ایجنسی کے تعاون سے پہاڑ کاٹنے میں مہارت رکھنے والی جاپانی تعمیراتی کمپنی توبی شیما کارپوریشن کو یہ منصوبہ ایوارڈ کیا گیا ہے‘ اس منصوبے پر 13ارب روپے لاگت آئے گی اور یہ منصوبہ 2سال میں مکمل ہو گا‘اس منصوبے کے تحت سخی سرور تا فورٹ منرو پہاڑ کو کاٹ کرزبردست ہائی وے بنائی جائے گی جس کے بعد فورٹ منرو کا پہاڑی سفر پر خطرنہیں رہے گا‘اس کے علاوہ فورٹ منرو میں جدید سہولیات فراہم کرکے اسے سیاحوں کیلئے پرکشش بنا دیا جائے گا‘فورٹ منرومیں موسم گرما میں بھی موسم خوشگوار رہتا ہے‘ٹھنڈی ہوائیں سیاحوں کے دل موہ لیتی ہیں‘دوسری جانب قومی اقتصادی راہداری منصوبے پر بھی کام جاری ہے ‘منصوبہ مکمل ہونے کے بعد ملتان تا گوادر سفر محض 12گھنٹے رہ جائے گا‘واضح رہے کہ ملتان تا کوئٹہ530 کلومیٹر او ر آگے کوئٹہ تا گوادر 650کلومیٹر سفر ہے‘مجموعی طور پر ملتان تا گوادر سفر 1180کلومیٹر ہے‘اس وقت ملتان تا گوادر سفر تقریباً 24گھنٹے میں طے ہوتا ہے‘پاک چین اقتصادی راہداری منصوبہ مکمل ہونے کے بعد ملتان تاگوادر سفر محض 12گھنٹے میں طے ہوگا‘اس کے لئے ملتان سے ڈیرہ غازیخان‘سخی سرور‘فورٹ منرو‘رکنی‘لورالائی ‘مسلم آباد‘کوئٹہ اور پھر گوادر آجائے گا۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -