حکومت سندھ کی صحافی عزیز میمن کے قتل کی تحقیقات کیلئے 10رکنی جے آئی ٹی تشکیل

حکومت سندھ کی صحافی عزیز میمن کے قتل کی تحقیقات کیلئے 10رکنی جے آئی ٹی تشکیل

  



اسلام آباد(آئی این پی) سندھ حکومت نے سنیئر صحافی عزیز میمن کے قتل کی تحقیقات کے لیے پارلیمانی رپورٹرز ایسوسی ایشن کا مطالبہ مانتے ہوئے چیئرمین سینیٹ کی مداخلت پر 10رکنی جے آئی ٹی تشکیل دے دی،جے آئی ٹی میں سند ھ پولیس کے ساتھ آئی ایس ایس(بقیہ نمبر57صفحہ12پر)

، انٹیلی جنس بیورو اور سپیشل برانچ کے نمائندے بھی شامل ہونگے، پی آراے کے فیصلہ پر 4مارچ کو صحافیوں کے سینیٹ کی پریس گیلری سے واک آؤٹ کے بعد چیئرمین سینیٹ کی جانب سے آئی جی سندھ کو خط لکھا گیا تھا وزیراعلی سندھ کی منظوری کے بعد ہوم ڈیپارٹمنٹ سندھ نے عزیز میمن کے قتل کی تحقیقات کے لیے جے آئی ٹی کی تشکیل نو کی گئی ہے، اس سلسلے میں با ضابطہ نوٹیفکیشن جاری کر دیا گیا ہے، جے آئی ٹی کے سربراہ ایڈیشنل آئی جی کراچی رینج ہوں گے، ممبران میں ایس ایس پی ضلع نوشہرو فیروز، ایس ایس پی ضلع شہید بے نظیر آباد، آئی ایس ایس، انٹیلی جنس بیورو اور سپیشل برانچ کے نمائندے، میڈیکل اور فرانزک ماہرین شامل ہیں، جے آئی ٹی ضرورت پڑنے پر کسی بھی دیگر ایجنسی یا محکمہ کا تعاون حاصل کرسکے گی جے آئی ٹی 15روز میں تحقیقات مکمل کرکے اپنی رپورٹ پیش کرے گی، صدر پی آراے بہزادسلیمی نے سندھ کے مقتول صحافی عزیز میمن کے قتل کی غیر جانبدارانہ تحقیقات کے لیے جے آئی ٹی کی تشکیل کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ جے آئی ٹی کی تشکیل سے صحافی عزیز میمن کی موت کے اصل حقائق سامنے آئیں گے۔ پی آراے نے جے آئی ٹی کی تشکیل میں چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کے کردار کو سراہاہے۔

عزیز میمن

مزید : ملتان صفحہ آخر