نیو گاڑیوں کی رجسٹریشن کی 20لاکھ کمپیوٹر نمبر پلیٹس جاری نہ ہو سکیں

نیو گاڑیوں کی رجسٹریشن کی 20لاکھ کمپیوٹر نمبر پلیٹس جاری نہ ہو سکیں

  



لاہور(ارشدمحمود گھمن/سپیشل رپورٹر) سیکرٹری اور ڈی جی ایکسائزکی عدم توجہی اور ناقص حکمت عملی کے سبب پنجاب بھر میں نیو گاڑیوں کی رجسٹریشن کی 20لاکھ کمپیوٹر نمبر پلیٹس سے گاڑی مالکان محروم جبکہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن موٹر رجسٹریشن نے ایک سال میں 2ارب50کروڑ روپے ایڈوانس نمبر پلیٹس کی مد میں شہریوں سے بٹورلئے،شہریوں کو خواری کے سوا کچھ حاصل نہ ہوا۔واضح رہے کہ حکومت پنجاب کی جانب سے متعدد بار متعلقہ محکمہ کے 4ڈی جی تبدیل کئے گئے جس کے باجود تاحال مذکورہ کمپیوٹرائزڈنمبرپلیٹس التواء کا شکار ہیں۔تفصیلات کے مطابق مارچ 2019ء سے 2020ء میں ایک سال مکمل ہونے کے بعد بھی ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن موٹر رجسٹریشن 10لاکھ گاڑیوں کے مالکان کوکمپیوٹرائزڈ نمبر پلیٹس جاری کرنے میں ناکام رہا جس میں ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن موٹر رجسٹریشن ریجن سی فرید کورٹ ہاؤس لاہورسمیت پنجاب بھر کے 9ریجن شامل ہیں،متاثرین گاڑی مالکان سے مذکورہ محکمہ نے نمبرپلیٹس کی مد میں تقریباً2 ارب 50کروڑ روپے وصول کررکھے ہیں،محکمہ فی کس کمپیوٹرائزڈ نمبر پلیٹس کے تاحال1250 روپے شہریوں سے وصول کررہاہے،یادرہے کہ سابق حکومت نے کمپیوٹرائزڈ نمبر پلیٹس اور سمارٹ کارڈ کے اجراء کے لئے بھی قومی خزانہ سے کروڑوں روپے خرچ کئے تھے، بعدازاں تبدیلی کا نعرہ لے کر آنے والی موجودہ حکومت نے باقاعدہ طور پر نیورجسٹریشن کاخاتمہ کرکے سمارٹ کارڈ کااجراء بھی شروع کردیا تھالیکن ایک سال گزرنے کے باوجود بھی سیکرٹری اور ڈی جی ایکسائز کی ناقص حکمت عملی کے باعث رواں سال کے دوران بھی نیو رجسٹریشن گاڑیوں کے مالکان کمپیوٹرائزڈ نمبر پلیٹس اور سمارٹ کارڈ حاصل کرنے کے لئے دفاتر کے چکر لگالگاکرخوارہوگئے ہیں،مذکورہ محکمہ کے افسران آئے روز ہزاروں سائلین جوسمارٹ کارڈ اور نمبر پلیٹس حاصل کرنے کے لئے آتے ہیں،انہیں مختلف حیلوں بہانوں سے نئی تاریخ دے دی جاتی ہیں،ذرائع ایکسائز کے مطابق سمارٹ کارڈ اور نمبر پلیٹس کے حصول کے لئے لوگ کئی مہینوں سے دھکے کھارہے ہیں لیکن کوئی شنوائی نہیں ہوتی اور آئے روز نیا بہانہ بنا کر انہیں آئندہ تاریخ دے دی جاتی ہے جس کے بعد بھی انہیں یہاں آنے پر ناکامی کا سامنا کرنا پڑرہا ہے،انہوں نے مزید بتایا کہ گاڑی کی کمپیوٹر نمبر پلیٹ نہ ہونے کی وجہ سے پنجاب پولیس،ٹریفک وارڈنز اورمحکمہ ایکسائز کاعملہ بلاوجہ بہانے بنا کر تنگ کرکے پیسے بٹورنے میں مصروف ہے،حالانکہ متاثرین گاڑی مالکان نے کمپیوٹرائزڈ نمبر پلیٹ کی مد میں کروڑوں روپے اداکررکھے ہیں لیکن اس کے باجود انہیں خوار کیا جارہاہے،اس حوالے سے ڈی جی ایکسائز محمد سہیل شہزاد کاکہناہے کہ شہریوں کو درپیش مسائل کو حل کرنے کی پوری کوشش کررہے ہیں۔

نیو گاڑیوں کی رجسٹریشن

مزید : صفحہ آخر /رائے