کرونا مریضوں کی تعداد 238، سندھ لاک ڈاؤن، سرکاری دفاتر، شاپنگ مالز، مارکیٹیں بند،کل سے انٹرسٹی بسیں بھی نہیں چلیں گی، پاکستان سپر لیگ کے سیمی فائنل اور فائنل کے میچ ملتوی، فوج ہر ممکن تعاون کیلئے تیار ہے: جنرل باجوہ

      کرونا مریضوں کی تعداد 238، سندھ لاک ڈاؤن، سرکاری دفاتر، شاپنگ مالز، ...

  



لاہور کراچی، اسلام آباد،پشاور،کوئٹہ (سٹاف رپورٹر، جنرل رپورٹر، مسانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)کرونا وائرس پاکستان میں تیزی سے پھیلنے لگا، وبا سے متاثرہ مریضوں کی تعداد 236 ہوگئی پاکستان میں کرونا وائرس تیزی سے پھیلنے لگا رپورٹس کے مطابق سندھ میں 172، پنجاب 26، بلوچستان 16، خیبر پختونخوا 15، اسلام آباد 2 اور گلگت کے پانچ شہریوں میں کرونا وائرس کی تصدیق ہو چکی ہے۔وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کے ٹویٹر اکاؤنٹ سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ صوبہ پنجاب میں کرونا وائرس سے متاثر ہونے والے مریضوں کی تعداد 26 ہو چکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حفاظتی اقدامات کو پیش نظر رکھتے ہوئے تمام مشتبہ مریضوں اور 736 زائرین کو قرنطینہ میں رکھنے کا فیصلہ کیا ہے جبکہ تفتان سے آنے والے 1276 زائرین کو بھی قرنطینہ میں رکھا جائے گا۔ مت سندھ نے کورونا وائرس پھیلاؤ کے خطرے کے پیش نظر ریسٹورنٹ اور شاپنگ مال 15 دن کیلئے بند کرنے کا فیصلہ کرلیا۔ ترجمان وزیراعلیٰ سندھ کے مطابق وزیراعلیٰ مراد علی شاہ نے کہا کہ وائرس کا مقابلہ کرنے کے لیے ہمیں اس کے پھیلاؤ کو روکنا ہے، اگر یہ وائرس پھیل گیا تو اسپتال کم پڑجائیں گے۔حکومت سندھ نے کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے اہم فیصلے کرلیے ہیں جس کے بعد ساحل سمندر اور پبلک پارکس کو بھی 15 روز کے لیے بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ شہر میں ریسٹورنٹ اور شاپنگ مال بھی 15 دن کے لیے بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے تاہم سبزی اور راشن کی دکانیں کھلی رہیں گی اور فیصلوں کا اطلاق رات 12 بجے سے ہوگا۔سبزی اور راشن کی دکانیں کھی رہیں گی۔مچھلی اور گوشت کی دکانیں بھی کھلی رہیں گی۔میڈیکل اسٹور بھی کھلے رہیں گے،ریسٹورنٹس کھلے رہیں گے لیکن وہاں بیٹھ کر کھانے کی اجازت نہیں ہوگی۔ترجمان حکومت سندھ کا کہنا ہے کہ شاپنگ مالز میں راشن شاپس ہیں تو انہیں کھلا رکھ سکتے ہیں۔ترجمان کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ نے کے الیکٹرک کو ہدایت دی ہے کہ ان مالز اور ریسٹورنٹس کے بند ہونے کے دوران بجلی بلا تعطل سپلائی کریں۔ترجمان نے بتایا کہ بڑے ہوٹلز میں ریسٹورنٹس سروس بند ہوگی، کھانے کی سہولت اور مجمع پر پابندی ہوگی تاہم ریسٹورنٹس پر کھانے آرڈر ہوسکتے ہیں۔ ترجمان وزیراعلیٰ سندھ کے مطابق سرکاری دفاتر جمعرات سے بند کردیئے جائیں گے جس کا نوٹیفکیشن چیف سیکرٹری جاری کریں گے۔اس کے ساتھ ساتھ سندھ میں انٹرسٹی بس سروس پر بھی پابندی عائد کردی گئی ہے جس کا اطلاق بھی جمعرات سے ہوگا۔ترجمان سندھ حکومت مرتضیٰ وہاب کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس سے نمٹنے کے لیے 3 ارب روپے کا فنڈز قائم کیا گیا ہے جس میں وزیراعلیٰ اور کابینہ ارکان نے اپنی تنخواہیں جمع کرانے کا فیصلہ کیا ہے۔صوبہ سندھ میں کورونا وائرس کے ا?ج مزید 22 کیسز سامنے آئے جس کے بعد صوبے میں متاثرہ مریضوں کی مجموعی تعداد 172 ہوگئی ہے۔ تفتان سے سکھر پہنچنے والے مزید 15 زائرین کے کورونا وائرس کے ٹیسٹ مثبت آئے ہیں جس کے بعد اب متاثرہ زائرین کی تعداد 134 ہوگئی ہے۔کراچی میں بھی مزید 7 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے جس کے بعد شہر میں متاثرہ افراد کی تعداد 37 ہوگئی ہے جبکہ ایک متاثرہ شخص کا تعلق حیدر آباد سے ہے جس کی گزشتہ روز ہی تصدیق ہوئی تھیصوبہ سندھ میں بڑھتے ہوئے کرونا وائرس کیسز کے بعد سندھ حکومت نے عندیہ دیا ہے کہ کرونا وائرس کے باعث اگر حالات خراب ہوئے تو کرفیو بھی لگا سکتے ہیں۔کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے صوبائی وزیر اطلاعات ناصر شاہ کا کہنا تھا کہ ابھی حالات قابو میں ہیں خدانخواستہ ضرورت پڑی تو کرفیو بھی لگایا جاسکتا ہے، اب تک سندھ میں 172کیسز رپورٹ ہوچکے۔ سندھ حکومت 775ٹیسٹ کر چکی ہے۔صوبائی وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ فوری طور پر ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل سٹاف کو کنٹریکٹ پر بھرتی کیا جائے گا، ماسک اور سینیٹائزر ذخیرہ کرنے والوں کیخلاف کریک ڈاون کیا ہے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ وزیراعلی نے علاج معالجے کیلئے ضرورت کی چیزیں درآمد کرنے کا کہا ہے، زیادہ رش والی مارکیٹیں بند ہونگی، اگر وائرس بڑھتا ہے تو لوگوں کے پاس اشیائے ضروریہ پہنچانے کا انتظام کیا ہے۔ناصر شاہ کا پریس کانفرنس کے دوران مزید کہنا تھا کہ ضروری سروسز والے دفاتر کھلے رہیں گے، کل دفاتر کھلے ہونگے، پرسوں سے بند ہونگے۔ سندھ حکومت کے کچھ محکمے کل سے بند کر دیے جائیں گے۔ اس حوالے سے کل نوٹیفکیشن جاری کیا جائے گا۔کرونا وائرس کے پیش نظر پاکستان علما کونسل نے مشترکہ فتویٰ جاری کر دیا جس میں کیا گیا ہے کہ تمام مذہبی اجتماعات فوری طور پر ملتوی کر دیئے گئے ہیں۔پاکستان علما کونسل کی جانب سے جاری کئے گئے فتویٰ میں کہا گیا ہے کہ نماز جمعہ کے خطبات کو مختصر کرنے کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے، مساجد میں صفوں کے درمیان فاصلہ رکھا جائے، مساجد میں با جماعت نماز فرش پر ادا کی جائے، نماز کی ادائیگی سے پہلے سرف یا صابن سے فرش دھونا بہتر ہوگا۔فتویٰ میں مزید کہا گیا کہ پوری قوم کثرت سے استغفار کرے، آیت کریمہ پڑھی جائیں، صدقہ و خیرات دیا جائے، حکومتی تدابیر قطعی طور پر توکل اللہ کے خلاف نہیں، نمازی سنتیں گھر میں ادا کر کے مساجد آئیں، مصافحہ کے بجائے زبان سے اسلام علیکم و رحمتہ اللہ کہا جائے، مریض و بزرگ مساجد کے بجائے گھر میں نماز پڑھیں تو بہتر ہو گا، پاکستان کرکٹ بورڈ نے پاکستان سپر لیگ 2020 کے فائنل اور سیمی فائنل کے میچ ملتوی کر دیئے ہیں لیگ کے دونوں سیمی فائنلز اور فائنل کی نئی تاریخوں کا اعلان بعد میں کیا جائے گا، یہ فیصلہ چند روز قبل پاکستان چھوڑ کر جانے والے ایک کھلاڑی میں کورونا وائرس کی علامات ظاہر ہونے کے بعد کیا گیا ہے، مذکورہ کھلاڑی کی سکریننگ جلد مکمل کرلی جائے گی۔ پی سی بی نے ایک ذمہ دار اداراے کی حیثیت سے چاروں سیمی فائنلسٹ ٹیموں کے سکواڈز میں شامل تمام کھلاڑیوں، سپورٹ سٹاف، میچ آفیشلز، فرنچائز مالکان اور پروڈکشن کریو کے ٹیسٹ کے لیے تمام انتظامات کر رکھے ہیں۔ پی سی بی نے ان تمام افراد کو ٹیسٹ کی رپورٹ موصول ہونے تک سفر سے گریز کرنے کا مشورہ دیا ہے۔چیف ایگزیکٹو پی سی بی وسیم خان کا کہنا ہے کہ یہ فیصلہ ایک غیر ملکی کھلاڑی میں کورونا وائرس کی علامات ظاہر ہونے کے بعد کیا گیا ہے، مذکورہ کھلاڑی کا ٹیسٹ کچھ دیر بعد ان کے ملک میں ہوگا، پی سی بی لیگ میں شامل تمام افراد کے فوری ٹیسٹ کروانے کے لیے سہولیات فراہم کرے گا۔ اوفاقی حکومت نے چیف جسٹس آف پاکستان اور ہائیکورٹس کے چیف جسٹس صاحبان کو درخواست کی ہے کہ تمام عدالتیں تین ہفتوں کیلئے سول نوعیت کے مقدمات نہ سنیں۔وزارت قانون کی جانب سے رجسٹرار سپریم کورٹ کو خط لکھا گیا ہے جس میں نیشنل سیکورٹی کمیٹی کے حالیہ فیصلوں سے آگاہ کیا گیا، رجسٹرار کو حکومتی خط چیف جسٹس آف پاکستان کے سامنے رکھنے کا کہا گیا ہے۔ چیف جسٹس کو درخواست کی گئی ہے کہ تمام عدالتوں کو تین ہفتوں تک سول نوعیت کے مقدمات نہ سننے کی ہدایت کی جائے، ضمانت اور ریمانڈ کے کیسز میں جوڈیشل مجسٹریٹس اور سیشن عدالتوں کے ججز جیلوں کے دورے کریں۔خط میں کہا گیا ہے کہ تین ہفتوں بعد حکومت اس درخواست کا دوبارہ جائزہ لے گی۔کرونا وائرس خطرات کے پیش نظر پاکستان نے تمام ممالک میں قونصلر سروسز کو معطل کر دیا ہے، فیصلے کے تحت قونصلر سروسز18 مارچ سے3 1اپریل تک معطل رہیں گی تاہم پاور آف اٹارنی کی تصدیق کا عمل جاری رہے گا جبکہ دستاویزات کی کورئیرسروسز کے ذریعے تصدیق ہوگی، منگل کے روز ترجمان دفتر خارجہ پاکستان کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیاہے کہ کرونا وائرس کے پیش نظر وزارت خارجہ کی قونصلر سروسز معطل کر دی گئی ہیں اور یہ 18 مارچ سے3 1اپریل تک معطل رہیں گی جبکہ پاور آف اٹارنی کی تصدیق کا عمل جاری رہے گا۔ترجمان دفتر خارجہ نے مزید کہا کہ دستاویزات کی کورئیرسروسز کے ذریعے تصدیق ہوگی اور اس حوالے سے پاکستانی میشنز ڈپلومیٹک کور سے رابطے کیلئے خصوصی سیل بھی تشکیل دیاگیاہے۔ آ رمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کمانڈرز کو ہدایت کی ہے کہ عوام کی فلاح وبہبود کے لیے سول انتظامیہ کی ہر ممکن مدد کی جائے پاک فوج کرونا سے نمٹنے کے لیے حکومت سے ہر ممکن تعاون کے لیے تیار ہے،ملک بھر میں ملٹری ہسپتالوں میں ہیلتھ ڈیسک قائم کر دئیے گئے ہیں،پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے مطابق کرونا وائرس کے پیش نظر ملک بھر میں ملٹری ہسپتالوں میں ہیلتھ ڈیسک قائم کر دیا گیا ہے، بڑے ملٹری ہسپتالوں میں کرونا ٹیسٹ لیبارٹریز بھی قائم کر دی گئیں۔آئی ایس پی آر کے مطابق پاک فوج کرونا سے نمٹنے کے لیے حکومت سے ہر ممکن تعاون کے لیے تیار ہے۔ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کمانڈرز کو ہدایت کی ہے کہ عوام کی فلاح وبہبود کے لیے سول انتظامیہ کی ہر ممکن مدد کی جائے۔

پاکستان کرونا

نئی دہلی، لندن،تہران،واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک،آئی این پی)کورونا وائرس 162 ملکوں تک پھیل گیاہے اور دنیا بھر میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد ایک لاکھ 90 ہزار 433 ہوگئی ہے جب کہ اس مہلک وائرس سے اب تک 7 ہزار 525 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے اٹلی،اسپین،فرانس اور ملائیشیا میں لاک ڈاؤن کردیا گیا ہے جب کہ برطانیہ میں بھی حکام اس حوالے سے غور کر رہے ہیں۔ترکی اور متحدہ عرب امارات میں باجماعت نماز پر پابندی لگادی گئی ہے جب کہ ایران اور عراق میں نماز جمعہ کی ادائیگی بھی روک دی گئی ہیسعودی عرب میں حرمین شریفین (مسجد الحرام اور مسجد نبوی) کے علاوہ تمام مساجد میں جمعہ اور پنجگانہ نمازوں پر پابندی عائد کردی گئی۔عرب نیوز کے مطابق یہ فیصلہ سعودی عرب کی سینئر علماء اتھارٹی کے اجلاس میں کیا گیا جس کا مقصد کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنا ہے۔علماء اتھارٹی کی جانب سے جاری بیان میں اعلان کیا گیا ہے کہ نماز کے وقت مسجد الحرام اور مسجد نبوی کے علاوہ تمام مساجد کے دروازے بند رہیں گے اس لیے شہری گھروں پر ہی نماز کی ادائیگی کریں۔اعلان کے مطابق سعودی عرب میں نماز جمعہ کی ادائیگی بھی معطل رہے گی اور نماز جمعہ کے بدلے ظہر کی نماز چار رکعت ادا کی جائے گی۔بیان میں میں کہا گیا ہے کہ مساجد سے صرف اذانیں دی جائیں گی اور مؤذن اذان میں آؤ نماز کی طرف کے بجائے نماز گھر پر ہی ادا کریں کے الفاظ ادا کریں گے جس کا مطلب جہاں ہیں وہیں نماز ادا کریں بھی لیا جاسکتا ہے۔علماء اتھارٹی کا کہنا ہے کہ یہ عارضی اقدام مفاد عامہ اور عوام کی صحت کے تحفظ کی خاطر کیا گیا ہے اور اس کی مذہبی طور پر اجازت ہے۔۔دنیا بھر کے سائنسدان مہلک کورونا وائرس کی ویکسین کی تیاری کے لیے سرتوڑ کوششیں کررہے ہیں۔ کورونا وائرس کے باعث دنیا بھر میں کاروباری سرگرمیاں شدید متاثر ہوئی ہیں جس کے باعث تیل کی قیمتیں گذشتہ چند برسوں کے دوران کم ترین سطح پر ا?گئی ہیں۔مبینہ طور پر چین کے شہر ووہان سے پھیلنے والے وائرس سے سب سے زیادہ نقصان بھی چین کا ہوا ہے تاہم اب چین میں نئے کیسز کی کمی ہوئی ہے۔چینی حکام کے مطابق کورونا وائرس کے 21 نئے کیسز رپورٹ ہوئے ہیں جس میں سے ایک کورونا وائرس کے مرکز صوبہ ہوبے میں جب کہ دیگر کیسز کی تصدیق بیرون ملک سے آنے والوں میں ہوئی ہے۔چین کے نیشنل ہیلتھ کمیشن کے مطابق 24 گھنٹوں میں چین میں 13 نئی ہلاکتیں سامنے آئی ہیں جس کے بعد اموات کی تعداد3 ہزار226 ہوگئی ہیں۔چین بھر میں مریضوں کی تعداد 80 ہزار 800 سے بڑھ گئی ہیں،جس میں سے اب تک 68 ہزار 679 مریض صحت یاب ہو گئے اور 8 ہزار 976 افراد کا چین کے اسپتالوں میں علاج جاری ہے۔چین کے بعد اٹلی کورونا سے متاثر ہونے والا دوسرا بڑا ملک ہے، اٹلی میں اب تک 27 ہزار سے زائد افراد کورونا سے متاثر ہوچکے ہیں جن میں سے 2 ہزار 158 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔اٹلی میں کورونا وائرس کے زیرعلاج مریضوں کی تعداد چین سے بھی کئی گنا بڑھ چکی ہے اور اس وقت 23 ہزار73 افراد زیر علاج ہیں جب کہ چین میں اِس وقت زیر علاج مریضوں کی کل تعداد 9 ہزار 848 ہے۔خیال رہے کہ اٹلی میں اِس وقت لاک ڈاؤن جاری ہے اور ڈیڑھ کروڑ سے زائد آبادی کو قرنطینہ میں رکھا گیا ہے۔حکومت کی جانب سے ملک بھر میں اجتماع کی بھی اجازت نہیں ہے جس کے باعث کورونا وائرس سے مرنے والے افراد کی تجہیز و تدفین میں بھی مشکلات کا سامنا ہے۔ایران میں کورونا وائرس سے مزید 135 افراد انتقال کر گئے ہیں جس کے بعد ایران میں اموات کی تعداد 988 ہوگئی ہے۔سپین میں کورونا وائرس سے مزید 168 افراد ہلاک ہوئے ہیں جس کے بعد ملک میں ہلاکتوں کی تعداد 510 ہوچکی ہے۔ہسپانوی وزارت صحت کے مطابق اسپین میں کورونا سے متاثرہ تقریباً 1500 نئے کیسز ریکارڈ ہونے کے بعد اسپین میں کورونا سے متاثرہ افراد کی تعداد 11 ہزار سے تجاوز ہوچکی ہیجرمنی میں بھی کورونا وائرس کے کیسز میں تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے اور 1300 نئے کیسز کے بعد کل تعداد 8 ہزار 588 ہوچکی ہے۔جرمنی میں مزید 6 افراد کی اموات کے بعد ہلاکتوں کی تعداد 23 ہوگئی ہے جس کے بعد حکام نے فرانس، ا?سٹریا اور سوئٹزرلینڈ کے ساتھ سرحدیں بند کردی ہیں۔جنوبی کوریا میں کورونا وائرس کے 6 مزید مریض ہلاک ہوئے ہیں جس کے بعد کل ہلاکتوں کی تعداد 81 ہوچکی ہے جب کہ متاثرہ افراد کی تعداد 8 ہزار 320 ہوچکی ہے۔فرانس میں اب تک کورونا وائرس سے 148 افراد ہلاک ہوچکے ہیں جب کہ متاثرہ افراد کی کل تعداد 6 ہزار 633 ہوچکی ہے۔حکام کی جانب سے کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے 15 دن کا لاک ڈاؤن لگا دیا گیا ہے جس کے تحت شہریوں پر سخت پابندیاں عائد کی گئی ہیں اور غیر ضروری طور پر گھر سے نکلنے سے منع کردیا گیا ہے۔امریکا میں بھی کورونا وائرس سے مزید 8 افراد ہلاک ہوئے ہیں جس کے بعد وہاں کل ہلاکتوں کی تعداد 94 ہوچکی ہیبین الاقوامی مالیاتی فنڈ(آئی ایم ایف)نے کہا ہے کہ وہ کورونا وائرس سے متاثرہ اور معاشی اثرات سے نبرد آزما ممالک کی مدد کے لیے 10 کھرب ڈالر قرضہ دینے کے لیے تیار ہے۔واضح رہے کہ 15 مارچ کو امریکی فیڈرل ریزرو نے معاشی نمو کی حوصلہ افزائی کے لیے سود کی شرح صفر کردی تھی۔بین الاقوامی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق علاوہ ازیں واشنگٹن نے معیشت کو کورونا وائرس کے اثرات سے بچانے کے لیے 700 ارب ڈالر کے پروگرام بھی شروع کیے۔آئی ایم ایف کی منیجنگ ڈائریکٹر کرسٹالینا جورجیفا نے ایک بیان میں کہا کہ آئی ایم ایف رکن ممالک کے لیے 10 کھرب ڈالر کے قرض دینے کے لیے تیار ہے۔انہوں نے کہا کہ دفاع کی پہلی لائن کے طور پر فنڈز تیزرفتاری سے جاری کیے جائیں گے تاکہ بیلس آف پے منٹ سے دوچار ممالک کی مدد کی جا سکے۔کرسٹالینا جورجیفا نے کہا کہ مذکورہ فنڈ ابھرتی اور ترقی پذیر معیشتوں کو 50 ارب ڈالر تک اور کم آمدنی والے رکن ممالک کے لیے 10 ارب ڈالر صفر شرح سود پر مشتمل ہوگا۔بھارت نے کورونا وائرس سے بچنے کے لیے احتیاطی تدابیر اپناتے ہوئے یورپی ممالک، برطانیہ، ترکی، ملائیشیا، افغانستان و فلپائن سے آنے والے شہریوں پر ملک میں داخل ہونے پر پابندی عائد کردی۔بھارت میں 17 مارچ کی صبح تک کورونا وائرس کے کیسز کی تعداد بڑھ کر 199 تک جا پہنچی تھی جب کہ وہاں ہلاکتوں کی تعداد بھی تین تک جا پہنچی ہے۔۔یوکرین کے دارالحکومت کیف میں نوول کرونا وائرس کے پہلے 2 مریضوں کی تصدیق ہوگئی ہے۔ جمہوریا کوریا میں منگل کے روز مقامی وقت کے مطابق تقریبا نصف شب کو کرونا وائرس کے 84 مزید کیسز رپورٹ ہوئے ہیں جس سے کل مریضوں کی تعداد بڑھ کر 8ہزار 320 ہوگئی ہے۔23 دنون سے اتوار کو پہلے دوہندسوں پر مبنی کیسز ریکارڈ کئے جانے کے بعد مسلسل تین دنوں سے نئے مصدقہ کیسز کی تعداد 100 سے کم ہے۔6 مزید اموات کی تصدیق کے بعد مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 82 ہوگئی ہے برازیل کی وزارت صحت نے پیر کے روز کہا ہے کہ ملک میں کرونا وائر س کے مصدقہ مریضوں کی تعداد 234 تک پہنچ گئی ہے جو کہ گزشتہ روز کے مقابلے میں 34 زیاد ہ ہے۔کئی ریاستوں نے پہلے ہی وائرس کے پھیلا کو کم کرنے کے لئے اقدامات اٹھائے ہیں جن میں اسکولوں میں کلاسز معطل کرنا،تھیٹر اور کنسرٹ ہال بند کرنا شامل ہے،کئی چرچ اور مذہبی مقامات اپنی سرگرمیاں معطل کرچکے ہیں افغا نستان کے مغربی صوبہ ہرات میں کرونا وائرس کے ایک نئے کیس کی تصدیق کے بعد کرونا وائرس کے مصدقہ مریضوں کی تعداد 22 تک پہنچ گئی ہے۔امریکی وزارت دفاع پینٹاگان نے تصدیق کی ہے کہ امریکی وزیر دفاع مارک ایسپر اور ان کے نائب کو کرونا کے شبے میں قرنطینہ منتقل کردیا گیا ہیامریکی ریاست نیوجرسی میں مہلک کرونا وائرس کو پھیلاؤ کو روکنے کی کوشش میں کرفیو نافذ کیا جائے گا، یہ اعلان ریاست کے گورنر نے گزشتہ روز کیا ہے۔گورنر فل مرفی نے کہا ہے کہ آج رات سے 8بجے کے بعد تمام غیر لازمی پرچون،تفریحی مراکز اور کاروبار بند کیے جائیں گے۔انہوں نے کہا ہے کہ نیوجرسی میں تمام غیر لازمی اور غیر ہنگامی سفر کی رات آٹھ بجے سے لے کر صبح پانچ بجے تک شدت سے حوصلہ شکنی کی جاتی ہے۔سوڈان نے گزشتہ روز کرونا وائرس کی عالمی وباء سے نمٹنے کے لئے ہنگامی حالت اور سرحدوں کی تقریباً مکمل بندش کا اعلان کردیا ہے۔سوڈان کے اعلیٰ سلامتی ادارے سلامتی و دفاعی کونسل نے آج فیصلہ کیا ہے کہ کرونا وائرس سے نمٹنے کے لئے ملک میں طبی ایمرجنسی کا اعلان کیا جائے، یہ بات ادارے نے ایک بیان میں بتائی جس میں مزید تفصیلات نہیں دی گئی ہیں ایران میں کورونا وائرس کے ممکنہ پھیلاؤ کو روکنے کیلئے 85 ہزار قیدی عارضی طور پر رہا کردیے گئے ہیں۔ ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق ایرانی عدلیہ کے ترجمان کے مطابق رہائی پانے والے قیدیوں میں سے آدھے سیکیورٹی سے تعلق رکھنے والے قیدی ہیں۔ایرانی ترجمان نے ابھی واضح نہیں کیا کہ رہا ہونے والے قیدیوں میں سیاسی قیدی بھی شامل ہیں اور یہ بھی واضح نہیں کہ رہائی پانیوالیقیدی واپس جیل کب جائیں گے.ترجمان کے مطابق جیلوں میں وبا کے پھیلاوکو روکنے کیلئے احتیاطی اقدامات کئے ہیں

کرونا ہلاکتیں

مزید : صفحہ اول